.

امریکی صدر کے دورہ عراق پرایران اپنا منہ بند رکھے: عراقی سیاست دان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراقی سیاسی رہ نمائوں‌ نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے حالیہ دورہ عراق پر ایران کی جانب سے کی گئی تنقید مسترد کر دی ہے۔ عراق کی الامہ پارٹی کے سربراہ نے کہا ہے کہ ایران بلا جواز عراق کے اندرونی معاملات میں دخل اندازی کر رہا ہے۔ تہران کو امریکی صدر کے دورہ عراق پر چیخ پکار کرنے کی کوئی ضرورت نہیں۔

'الامہ پارٹی' کے سربراہ مثال الآلوسی نے"العربیہ ڈاٹ نیٹ" سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ایرانی وزارت خارجہ کے ترجمان کی جانب سے صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے دورہ عراق پر تنقید بغداد کے اندرونی معاملات میں مداخلت کے مترادف ہے۔

انہوں نے کہا کہ ایران عراق کے اندرونی معاملات میں کھلی مداخلت کر رہا ہے۔ عراق ایک آزاد اور خود مختار ملک ہے اورتہران کو عراق آنے والے کسی ملک کے لیڈر پر تنقید کا کوئی جواز نہیں۔

الآلوسی کا کہنا تھا کہ عراقی حکومت یا وزارت خارجہ کی طرف سے تہران کے خلاف بغداد کے اندرونی امور میں مداخلت کا باقاعدہ اعتراض کیا جاسکتا ہے۔

انہوں‌ نے عراق میں موجود دہشت گرد ملیشیائوں کو نکال باہر کرنے اور ان کی طاقت کچلنے کے لیے امریکا اور عراق کے درمیان تزویراتی شراکت کو مزید مضبوط کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔

خیال رہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے حالیہ دورہ عراق پر ایران کی جانب سے سخت تنقید کی گئی تھی۔ ایرانی وزارت خارجہ کے ترجمان بہرام قاسمی نے جمعہ کے روز ایک بیان میں کہا تھا کہ امریکی صدر کا دورہ عراق کی خود مختاری کی توہین ہے۔