.

سعودی عرب میں دریافت قدرتی غاروں کو سیاحتی مقامات میں شامل کرنے کی تیاری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی جیولوجیکل سروے نے ملک میں ایسے قدرتی غاروں کا انکشاف کیا ہے جن کو عنقریب سیاحت اور قومی ورثے سے متعلق جنرل اتھارٹی کے تعاون سے ،،، مملکت میں سیاحتی مقامات کی فہرست میں شامل کر لیا جائے گا۔

سعودی سرکاری خبر رساں ایجنسی SPA کو دیے گئے بیان میں جیولوجیکل سروے اتھارٹی کے سرکاری ترجمان طارق ابا الخیل نے بتایا کہ "اتھارٹی کئی غاروں کو سیاحوں کے لیے پُر کشش بنانے کا ارادہ رکھتی ہے۔ ان میں بعض غاروں کی عمر 3 کروڑ برس سے بھی زیادہ ہے۔ جیولوجیکل سروے کے ماہرین نے تفصیلی مطالعاتی تحقیق کے بعد ان غاروں کا انکشاف کیا"۔

ابا الخیل نے باور کرایا کہ 250 سے زیادہ غاروں کے انکشاف کے علاوہ ہزاروں غیر دریافت شدہ غاروں کے وجود کے ساتھ مملکت میں ماحولیاتی اور ارضیاتی سیاحت میں ترقی دیکھی جا رہی ہے۔ ہمیں چاہیے کہ اس قدرتی دولت کی حفاظت کریں جو مملکت کو مالا مال بناتی ہے"۔

دوسری جانب سعودی جیولوجیکل سروے اتھارٹی میں غاروں کے شعبے کے سربراہ محمود الشنطی نے ان قدرتی غاروں کو قومی دولت قرار دیا جس میں نادر نوعیت کی ماحولیاتی سیاحت کے لیے علمی عناصر اکٹھا ہو گئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ان میں بعض غاروں سے فائدہ اٹھاتے ہوئے انہیں اکیڈمک اسٹڈیز اور سائنسی ریسرچ کے کام میں بھی لایا جا سکتا ہے۔