.

عراقی فوج کی شام میں داعش کے کمانڈروں پر بم باری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراقی فوج کا کہنا ہے کہ اُس کے لڑاکا طیاروں نے پیر کے روز شام میں دیر الزور کے نزدیک داعش تنظیم کی قیادت کے ایک اجلاس کو بم باری کا نشانہ بنایا۔ کارروائی کے نتیجے میں وہ عمارت تباہ ہو گئی جس میں مذکورہ افراد جمع تھے۔

بیان میں نشانہ بنائے جانے الے مسلح افراد کے بارے میں مزید تفصیل نہیں بتائی گئی۔

عراقی فوج کے بیان کے مطابق F-16 طیاروں نے شام کے مشرق میں السوسہ گاؤں کے احاطے میں کارروائی کی اور عمارت میں موجود داعش کے 30 اہم کمانڈروں کو نشانہ بنایا۔

یہ کارروائی عراقی حکومت کے اس عندیے کے ایک روز بعد سامنے آئی ہے جس میں کہا گیا تھا کہ شام سے امریکی فورسز کے انخلا کے آغاز کے ساتھ عراقی فورسز شام میں زیادہ بڑے پیمانے پر مداخلت کر سکتا ہے۔

عراق کو اندیشہ ہے کہ شام میں داعش تنظیم کے مسلح عناصر سرحد پار کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔

بغداد حکومت شامی صدر بشار الاسد کی موافقت کے ساتھ شامی اراضی میں متعدد فضائی حملے کر چکی ہے۔ علاوہ ازیں عراقی فوج اور شیعہ ملیشیا الحشد الشعبی گزشتہ چند ماہ کے دوران سرحد پر اپنے وجود کو بھی مضبوط بنا چکی ہے۔