.

عراقی خاتون رکن پارلیمنٹ کی شادی کی تقریب میں ہوائی فائرنگ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق میں ذرائع ابلاغ نے خاتون رکن پارلیمنٹ وحدہ الجمیلی کی ایک فوٹیج نشر کی ہے جس میں انہیں ایک شادی کی تقریب کےدوران اندھا دھند ہوائی فائرنگ کرتے دیکھا جاسکتا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ‌کے مطابق وحدہ الجمیلی نے فوٹیج سامنے آنے کے بعد "فیس بک" پر پوسٹ کردہ ایک بیان میں عوام سے معذرت کی ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کےمطابق عراقی خاتون رکن پارلیمان وحدہ الجمیلی کا کہنا ہے کہ وہ ایک قبائلی خاتون ہیں اور ہمارے ہاں شادی بیاہ کو بھرپور طریقے سے منایا جاتا ہے۔ بغداد کے ایک نواحی علاقے میں میرےایک قریبی عزیز کی شادی کی تقریب تھی اور میں نےاس میں ہوائی فائرنگ کی جس پر میں عوام سے معذرت خواہ ہوں۔

ادھر عراق کے ایک ماہر قانون حازم العامری نے ایک بیان میں کہاہے کہ ملک کے قانون کے تحت ہوائی فائرنگ سنگین جرم ہے اوربعض حالات میں اس کی سزا عمرقید تک ہوسکتی ہے۔ ان کاکہنا تھا کہ آئین کے آرٹیکل 405 کے تحت ہوائی فائرنگ جرم قرار دی گئی ہے کیونکہ اس کے نتیجے میں شہریوں کا جانی نقصان ہوسکتا ہے۔

ادھر عراقی وزارت صحت کےمطابق سال نو کے جشن کےموقع پر منچلوں کی ہوائی فائرنگ سے ایک بچہ جاں بحق اور 76 شہری زخمی ہوئے ہیں۔