.

سعودی عرب کے شہر جبیل میں چہچہاتے اور رقصاں پرندوں کی بہار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے مشرقی شہر جبیل کے "الفناتیر بیچ" پر واقع ایک پارک میں خصوصی پروگرام ترتیب دیا گیا ہے۔ خوب صورت آوازوں میں چہچہاتے اور رنگین پروں میں رقصاں پرندے آنے والوں کی توجہ کا اولین مرکز بن جاتے ہیں۔

المجد قدرتی ذخیرہ گاہ کے ڈائریکٹر ابراہیم العربی نے "العربیہ ڈاٹ نیٹ" سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ اس مقام پر 30 نادر نوعیت کے پرندوں کو جمع کیا گیا ہے جن کو عالمی سطح پر معدومیت کے خطرے کا سامنا ہے۔ ان پرندوں کو برازیل، انڈونیشیا، تنزانیہ، وسطی امریکا اور بھارت کے علاوہ ایمیزون کے جنگلات سے درآمد کیا گیا ہے۔

العربی کے مطابق ان پرندوں کے نادر ہونے اور پرکشش رنگوں کے حامل ہونے کے سبب ان کی قیمت 10 ہزار سے 70 ہزار ریال کے درمیان ہے۔ ان میں ایمیزون کا تیسرا بہترین پرندہ یعنی وہ سبز طوطا شامل ہے جو انسانوں کے ساتھ گفتگو کرنے میں مہارت رکھتا ہے۔ دیگر نادر پرندوں میں شاہ بلوط سینا مکاؤ، توکان، کوکاتو، کیپ طوطا، ہندوستانی مور، میجر مچلز کوکاتو، کیتالینا مکاؤ، ہیرلیکوئین مکاؤ، توراکو اور پام کاکیتو شامل ہیں۔

ایونٹ میں بازوں کی نمائش، عربی شاعری کی محفل اور سعودی عرب کے عوامی فنون کے پویلینز کے علاوہ بچوں کے لیے خصوصی کڈز پارک، بٹرفلائی پارک اور چیلنج گیمز کارنر بھی شامل ہے۔