.

غزہ پٹی میں فتح موومنٹ کے تمام دفاتر کی بندش

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

غزہ پٹی میں فتح موومنٹ کے ترجمان عاطف ابو سیف نے اعلان کیا ہے کہ موومنٹ نے "کسی بھی حملے کے اندیشے کے سبب" غزہ پٹی میں اپنے تمام دفاتر اور مراکز کو تا حکم ثانی بند کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

جمعے کے روز نامعلوم افراد نے فلسطینی اتھارٹی کے زیر انتظام فلسطین کے سرکاری ریڈیو اینڈ ٹیلی وژن کارپوریشن کے دفتر پر دھاوا بول کر وہاں سامان کی توڑ پھوڑ کی۔ کسی تنظیم نے اس حملے کی ذمے داری قبول نہیں کی مگر فلسطینی ذمے داران نے واقعے کا ذمے دار حماس تنظیم کو ٹھہرایا جس کا غزہ پٹی پر کنٹرول ہے۔

فلسطیی سرکاری میڈیا کے نگرانِ عام احمد عساف کا کہنا ہے کہ جمعے کے روز غزہ پٹی میں فلسطین ٹیلی وژن کے مرکز پر حملے کی تمام تر ذمے داری حماس تنظیم اور اس کو سپورٹ کرنے والے فریقوں پر عائد ہوتی ہے۔ حملے میں مرکز کا ساز و سامان اور اسٹوڈیو بری طرح برباد کیا گیا۔

واضح رہے کہ 2007 میں غزہ پٹی پر حماس تنظیم کے بزور طاقت کنٹرول کے بعد وہاں فلسطین ٹیلی وژن نے کام کرنا روک دیا تھا۔ بعد ازاں 2011 میں اس نے جزوری طور پر دوبارہ سے کام شروع کر دیا۔ غزہ پٹی میں فلسطین ریڈیو اینڈ ٹیلی وژن کارپوریشن میں 500 کے قریب ملازمین کام کرتے ہیں۔