ایران میں معاشی بحران کے باعث افغان مہاجرین کی بڑی تعداد وطن واپس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

ایران پر امریکا کی طرف سے عاید کردہ اقتصادی پابندیوں اور ایران کی خراب معاشی صورت حال کے نتیجے میں افغان مہاجرین کی بڑی تعداد وطن واپس آنے پرمجبور ہے۔ ایران میں اقتصادی بحران کے باعث 2018ء کے دوران 8 لاکھ افغان مہاجرین ایران سے واپس ہوئے۔

مہاجرین کے امور کی بین الاقوامی ایجنسی کی چیئرپرسن لورنس ھارٹ کا کہنا ہے کہ گذشتہ برس ایران سے 7 لاکھ 73 ہزار 125 افغان مہاجرن واپس ہوئے۔ سال 2017ء کی نسبت یہ تعداد 66 فی صد زیادہ ہے۔

نیوز ایجنسی "اے ایف پی" کے مطابق ایران سے افغان پناہ گزینوں کی واپسی ایران میں اقتصادی مواقع کی کمی کا نتیجہ ہے۔
سال 2018ء مہاجرین کی واپسی کے حوالے سے اہم ترین سال ہے۔ 2012؁ء کے بعد ایران سے سب سے زیادہ افغان مہاجرین گذشتہ برس واپس ہوئے ہیں۔

رپورٹ کے مطابق گذشتہ برس پاکستان سے 33 ہزار افغان پناہ گزین واپس افغانستان پہنچے۔ افغانستان میں ابتر معاشی حالات کے باعث لوگ انسانی اسمگلروں کے ہاتھ چڑھ جاتے ہیں۔ یہ انسانی اسمگلر نہیں ایران کی سرحد عبور کرانے کے عوض ان سے 300 سے500 ڈالر لیتے ہیں۔

ایران میں غیر رجسٹرڈ افغان تارکین وطن کی تعداد 15 سے 20 لاکھ کےدرمیان بتائی جاتی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں