یمنی صدر الحدیدہ معاہدے کی مدت میں توسیع پر آمادہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

یمن کے وزیر خارجہ خالد الیمانی نے باور کرایا ہے کہ صدر عبدربہ منصور ہادی الحدیدہ معاہدے کی مدت میں توسیع پر آمادہ ہو گئے ہیں جس کے بعد معاہدے کو پورا کرنے کے لیے نیا ٹائم ٹیبل وضع کیا جائے گا۔ یہ آمادگی یمن کے لیے اقوام متحدہ کے خصوصی ایلچی مارٹن گریفتھس کے ساتھ اجلاس کے دوران سامنے آئی۔

تاہم روزنامہ "الشرق الاوسط" میں شائع ہونے والے بیان میں الیمانی نے واضح کیا کہ یمنی حکومت حوثیوں کے ساتھ کسی نئی سیاسی یا اقتصادی مشاورت پر متفق نہیں ہوئی۔ الیمانی کے مطابق حکومت نے خصوصی ایلچی کو باور کرایا کہ سویڈن بات چیت میں اقتصادی حوالے سے پیش رفت میں ناکامی کے سبب حکومت اپنے شہریوں کے مسائل کے حل کے واسطے اقدامات کرے گی۔

الیمانی نے انکشاف کیا کہ یمنی حکومت نے سیاسی عمل کے سرپرست ممالک سے مطالبہ کیا کہ وہ اقوام متحدہ کے خصوصی ایلچی مارٹن گریفتھس اور الحدیدہ کے لیے اقوام متحدہ کے مبصر مشن کے سربراہ جنرل پیٹرک کمائرٹ پر دباؤ ڈالیں تا کہ اسٹاک ہوم معاہدے پر عمل درامد ہو سکے۔ انہوں نے مزید بتایا کہ مذکورہ سرپرست ممالک کے حوالے وہ خط بھی کیا گیا جو سعودی عرب ، امارات اور یمن نے الحدیدہ میں حوثیوں کی خلاف ورزیوں کے حوالے سے اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل کو ارسال کیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں