.

حکومت اور عوام حوثیوں کو نکال دینے پر قادر ہیں : یمنی وزیر اطلاعات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے وزیر اطلاعات معمر الاریانی نے عالمی برادری سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ حوثی ملیشیا کے اسٹاک ہوم معاہدے پر عمل درامد سے انکار کے حوالے سے فیصلہ کن موقف اختیار کرے۔

یمنی وزیر کا کہنا ہے کہ الحدیدہ میں فائر بندی کی نگراں کمیٹی میں شامل باغیوں کا وفد کھوکھلے جوازوں کی بنیاد پر شہر سے حرکت کرنے سے انکار کر رہا ہے۔ الاریانی نے باور کرایا کہ اگر اقوام متحدہ حوثیوں کو سویڈن معاہدے پر عمل درامد پر مجبور کرنے سے قاصر رہی تو یمنی عوام اور آئینی حکومت عرب اتحاد کی سپورٹ اور معاونت سے باغیوں کو نکال دینے کی قدرت رکھتے ہیں۔

دوسری جانب یمن کے لیے اقوام متحدہ کے خصوصی ایلچی مارٹن گریفتھس نے بدھ کے روز سلامتی کونسل کو بریفنگ پیش کی۔ انہوں نے کہا کہ تنازع کے دونوں فریقوں نے اسٹاک ہوم معاہدے پر عمل درامد کی پاسداری کا عزم دہرایا ہے۔ گریفتھس کے مطابق معاملے کے دشوار ہونے کے باوجود معاہدے پر عمل درامد میں پیش رفت ہوئی ہے۔

خصوصی ایلچی نے بتایا کہ فریقین نے الحدیدہ میں فائر بندی کی بڑی حد تک پاسداری کی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ "ہم فریقین پر زور دیتے ہیں کہ وہ الحدیدہ میں جذبہ خیر سگالی کے تحت اقوام متحدہ کی ٹیم کے ساتھ کام جاری رکھیں"۔

اسی طرح گریفتھس نے اس جانب بھی اشارہ کیا کہ تعز اور قیدیوں کے حوالے سے جن امور پر اتفاق ہوا ان پر بھی عمل درامد کے واسطے کام کیا جانا چاہیے۔

اقوام متحدہ کے ایلچی کے مطابق وہ آئندہ مشاورت کے جلد از جلد انعقاد کے واسطے فریقین کے ساتھ کام کر رہے ہیں۔