ایران دو مصنوعی سیارے خلا میں‌ بھیجنے کے اعلان پر ڈٹ گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایرانی صدر حسن روحانی نے کہا ہے کہ ان کا ملک عن قریب میزائلوں کی مدد سے دو مصنوعی سیارے خلاء میں بھیجنے گا۔ ایرانی صدر نے امریکا اور مغرب کی طرف سے تنبیہ کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ تہران خلائی تحقیقات کے میدان میں کسی بیرونی دبائو میں‌نہیں آئے گا۔ خیال رہے کہ امریکا اور مغربی ملکوں‌نے ایران کو خبردارکیا ہے کہ وہ خلائی تحقیقات کی آڑ میں اپنے میزائل پروگرام کو فروغ دینے کی کوششوں سے باز رہے ورنہ اسے اس کے خطرناک نتائج کا سامنا کرنا پڑے گا۔

صدرحسن روحانی نے شمالی ضلع کلستان کے شیر کنبد کاووس میں ایک اجتماع سے خطاب میں کہا کہ ایران کا مصنوعی سیارے خلاء میں بھیجنے کا فیصلہ حتمی ہے جس میں کوئی تبدیلی نہیں کی جائے گی۔

اس موقع پر انہوں‌نے کہا کہ "پیام" مصنوعی چاند زمین کے مدار سے 600 کلو میٹر کی مسافت پر رکے گا۔ یہ ایران کا سب سے دور پہلا مصنوعی سیارہ ہوگا جو ایک دن میں ایران سے چھ بار گذرے گا۔

ایرانی صدر نے کہا کہ "پیام" مصنوعی سیارے کے بعد "برسیمرگ" مصنوعی سیارہ بھی خلاء میں بھیجا جائے گا۔ یہ دونوں مصنوعی سیارے چند روز قبل ایران کی "امیر کبیر" یونیورسٹی کے ماہرین کی جانب سے مکمل کیے ہیں۔

خیال رہے کہ ایران نے عالمی تنقید اور امریکی دبائو کو چیلنج کرتے ہوئے خلائی تحقیقات کی آڑ میں میزائلوں کی تیاری اور انہیں اپ گریڈ کرنے کا سلسلہ جاری رکھا ہوا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں