.

ایران : رجائی شہر جیل میں 4 قیدیوں کو پھانسی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران میں انسانی حقوق کے کارکنان کے ایک گروپ "ہرانا" نے پیر کے روز بتایا کہ کرج شہر میں کم از کم 4 قیدیوں کو پھانسی دے دی گئی۔ بدھ کے روز رجائی شہر جیل میں موت کے گھاٹ اتارے جانے والے چاروں افراد پر "قتل" کا الزام تھا۔ دوسری جامنب ایران میں انسانی حقوق کی تنظیم کا کہنا ہے کہ پھانسی پر لٹکائے جانے والے افراد کی تعداد 12 ہے۔

"ہرانا" نے ایک قیدی کی شناخت جان لی جس کا نام محسن رضائی ہے جب کہ ایران میں انسانی حقوق کی تنظیم نے دو دیگر افراد کی شناخت معلوم کر لی جن کے نام رضا فرمانگو اور برات علی رحیمی ہیں۔ چوتھے شخص کی شناخت سامنے نہیں آ سکی۔

ایران میں انسانی حقوق کی تنظیم نے اپنی ایک رپورٹ میں بتایا ہے کہ گزشتہ بدھ کو پھانسی دیے جانے والے افراد کی تعداد 12 ہے۔ تنظیم کے مطابق پانچ دیگر قیدیوں کے خلاف بھی موت کی سزا پر عمل درامد ہوا جن کو دانستہ قتل کے الزام میں قصور وار ٹھہرایا گیا تھا۔ ان پانچ افراد کو بھی اسی جیل میں خفیہ طور پر موت کی نیند سلایا گیا مگر ان کے ناموں کی تفصیلات معلوم نہیں۔ ان افراد کی پھانسی کے بعد ایران میں مقامی میڈیا نے بھی اس کا ذکر نہیں کیا۔

پھانسی دیے جانے والے ایک 34 سالہ قیدی محسن رضائی 2010 سے جیل میں پڑا ہوا تھا۔ محسن کی والدہ نے بتایا کہ ان کو عدلیہ کے ایک ذمے دار نے آگاہ کیا تھا کہ ان کے بیٹے کے بری ہونے کے حوالے سے شواہد ملے ہیں۔ محسن نے ایک آڈیو ٹیپ میں دعوی کیا تھا کہ دوران حراست جبری اعتراف کے حصول کے واسطے پولیس نے اسے تشدد کا نشانہ بنایا۔

محسن کی والدہ کے مطابق ابتدا میں انہیں بھی چار ماہ کے لیے گرفتار رکھا گیا تھا۔

قابل ذکر بات یہ ہے کہ آبادی کی تعداد سے موازنے کی بنیاد پر جانچا جائے تو دنیا میں سب سے زیادہ پھانسیاں ایران میں دی جاتی ہیں۔

ایران میں انسانی حقوق کے کارکنان کے گروپ کے مطابق (یکم جنوری 2018 سے 20 دسمبر 2018 تک) ایک سال کے عرصے میں ایران میں کم از کم 236 افراد کو پھانسی دی گئی اور 195 کو موت کی سزا سنائی گئی۔ ایران میں پھانسیوں کی 72 فی صد سے زیادہ کارروائیوں کو حکومت یا عدلیہ کی جانب سے تذکرے میں نہیں لایا گیا۔

ایران میں انسانی حقوق کی تنظیم کا یہ بھی کہنا ہے کہ 2017 میں قتل کے الزام میں مجموعی طور پر 517 افراد کو موت کی سزا سنائی گئی اور اس سال 240 افراد کو پھانسی دی گئی۔