.

نیتن یاہو مسلم اکثریتی ملک چاڈ کا دورہ کرنے والے پہلے اسرائیلی وزیراعظم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیلی وزیراعظم بنیامین نیتن یاہو آیندہ اتوار کو افریقی ملک چاڈ کا دورہ کریں گے۔وہ اس مسلم اکثریتی ملک کا دورہ کرنے والے پہلے اسرائیلی وزیراعظم ہوں گے۔

صہیونی وزیراعظم جمہوریہ چاڈ کے صدر ادریس دیبی اتنو کے گذشتہ سال نومبر میں اسرائیل کے دورے کے جواب میں یہ دورہ کررہے ہیں۔ ان کے دفتر نے اس حوالے سے مزید کوئی تفصیل جاری نہیں کی ہے۔ البتہ یہ خیال کیا جاتا ہے کہ ان کا یہ دورہ ایک روزہ ہی ہوگا۔

انھوں نے صدر ادریس دیبی کے دورے کے موقع پر کہا تھا کہ وہ اپنے آیندہ دورے پر چاڈ کے ساتھ سفارتی تعلقات بحال کرنے کا اعلان کریں گے۔اس وقت دونوں لیڈروں نے اسلحے کی کسی ڈیل پر بات چیت کے حوالے سے کوئی تبصرہ کرنے سے انکار کیا تھا۔

چاڈ کے سکیورٹی حکا م کا کہنا ہے کہ انھوں نے ملک کے شمال میں باغیوں کے خلاف جنگ کے لیے اسرائیلی آلات خرید کیے ہیں۔چاڈ ان متعدد افریقی ممالک میں شامل ہے جو سخت گیر جنگجو گروپوں بوکو حرام اور داعش کے خلاف مغرب کی حمایت سے جاری جنگی کارروائیوں میں شریک ہیں۔

اسرائیل نے حالیہ برسوں کے دوران میں براعظم افریقا کے ممالک کے ساتھ سکیورٹی سے ٹیکنالوجی اور زراعت تک شعبوں میں تعاون کے فروغ کے لیے امکانات کا جائزہ لیا ہے۔

یادرہے کہ اسرائیل اور چاڈ کے درمیان سفارتی تعلقات 1972ء میں منقطع ہوگئے تھے۔ اس ملک کی آبادی ڈیڑھ کروڑ کے لگ بھگ ہے اور صدر ادریس دیبی 1990ء سے اس ملک کے حکمراں چلے آرہے ہیں۔وہ افریقا کے طویل عرصے تک حکمرانی کرنے والے سربراہان مملکت میں سے ایک ہیں۔ وہ اپریل 2016ء میں پانچویں مدت کے لیے صدر منتخب ہوئے تھے لیکن ان کے انتخاب کو مبصرین نے متنازعہ قرار دیا تھا۔