.

الحدیدہ سے گذشتہ برس جون سے اب تک دس لاکھ شہری ھجرت کر گئے: یو این

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اقوام متحدہ کی طرف سے جاری کردہ ایک رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ یمن کے ساحلی شہر الحدیدہ میں گذشتہ برس جون سے جاری لڑائی کے دوران اب تک دس لاکھ کے قریب شہری نقل مکانی پر مجبور ہوئے ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق اقوام متحدہ کے ادارہ برائے انسانی حقوق کی طرف سے جاری کی گئی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ جون 2018ء سے 15 جنوری 2019ء تک الحدیدہ سے نقل مکانی کرنے والے شہریوں کی تعداد ایک ملین تک جا پہنچی ہے۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ گذشتہ چھ ماہ کے دوران الحدیدہ میں جاری لڑائی کے نتیجے میں 1 لاکھ 74 ہزار 717 خاندانوں کے 10 لاکھ 48 ہزار 300 افراد گھر بار چھوڑنے پر مجبور ہوئے۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ الحدیدہ سے نقل مکانی کرنے والے افراد کی رجسٹریشن کے دوران ایک لاکھ 9 ہزار 867 خاندان رجسٹرڈ کیے گئے۔ دیگر شہروں میں 6 لاکھ 59 ہزار 300 افراد ھجرت پر مجبور ہوئے۔ ان میں سے زیادہ تر حجۃ، المحویت، ریمہ اور الحدیدہ کے باشندے شامل ہیں۔

رپورٹ کے مطابق اقوام متحدہ اور دوسرے ممالک کی طرف سے گذشتہ جون کے بعد ایک لاکھ 166 خاندانوں کو امداد فراہم کی گئی۔ امداد سےمستفید ہونے والے کل یمنی شہریوں‌کی تعداد 9 لاکھ 96 ہزار 600 ہے۔