.

جنگ بندی کی آڑ میں حوثی خود کو عسکری طور پر مضبوط کر رہے ہیں: رپورٹ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے ایران نواز حوثی باغیوں پر الزام ہے کہ وہ الحدیدہ شہر میں حکومت کے ساتھ جنگ بندی کے معاہدے کی آڑ میں خود کو مزید مسلح کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق امریکا کے تھنک ٹینک 'انسٹیٹیوٹ آف پالیسی اسٹڈیز برائے مشرق بعید" کی طرف سے جاری کردہ ایک رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ الحدیدہ شہر میں جنگ بندی کے نتیجے میں حوثی باغیوں کو خود کو دفاعی اور عسکری طور پر مضبوط کرنے کا موقع ملا ہے۔

یمنی وزارت دفاع کی ویب سائیٹ پرجاری اس رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ شہری علاقوں میں حوثی شدت پسند خود کو مزید مستحکم بنانے کی کوشش کر رہے ہیں۔ آئے روز الحدیدہ میں جنگ بندی کی خلاف ورزیاں‌ کی جا رہی ہیں اور اقوام متحدہ کی طرف سے جنگ بندی کے وضع کردہ اصولوں کی پاسداری نہیں کی جا رہی ہے۔

رپورٹ کے مطابق فضا سے لی گئی تصاویر سے دیکھا جاسکتا ہے کہ حوثیوں نے خود کو مزید محفوظ بنانے کے لیے 207 خندقیں کھود رکھی ہیں۔ ان کی تفصیلات اقوام متحدہ کے سامنے بھی پیش کی گئیں۔ حوثیوں‌نے جگہ جگہ رکاوٹیں کھڑی کر کے خود اپنے جنگجوئوں کو تحفظ دے رکھا ہے۔

الحدیدہ اور بعض دوسرے مقامات پر حوثیوں کے ٹھکانوں کے آس پاس بارودی سرنگیں بچھائی گئی ہیں جس کے نتیجے میں سرکاری فوج کی گاڑیوں اور اہلکاروں کو جانی ومالی نقصان پہنچنے کے ساتھ عام شہریوں کو بھی شدید مشکلات کا سامنا ہے۔