.

اسرائیل کے آئرن ڈوم دفاعی نظام نے شام سے آنے والا راکٹ روک لیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیلی فوج نے کہا ہے کہ اس کے فضائی دفاعی نظام نے شام سے آنے والے ایک راکٹ کو مار گرایا ہے ۔اس سے پہلے شام نے اسرائیل پر دمشق کے نواح میں ایک فضائی حملے کا الزام عاید کیا تھا۔

اسرائیلی فوج نے اتوار کو ایک بیان میں کہا ہے کہ ’’ گولان کی چوٹیوں کے شمالی حصے کی جانب ایک راکٹ فائر کیا گیا تھا ۔اس کو آئرن ڈوم فضائی دفاعی نظام نے روک لیا ہے‘‘۔اسرائیلی فوج کی خاتون ترجمان نے کہا ہے کہ یہ راکٹ شام کی جانب سے فائر کیا گیا تھا لیکن فوری طور پر مزید کوئی تفصیل جاری نہیں کی گئی ہے۔

شام کی سرکاری خبررساں ایجنسی سانا نے قبل ازیں ایک عسکری ذریعے کے حوالے سے بتایا تھا کہ ’’ دمشق کے فضائی دفاعی نظام نے ملک کے جنوب میں اسرائیل کے فضائی حملوں کا جواب دیا ہے اور اس کو اپنے مقاصد کے حصول سے روک دیا ہے‘‘ لیکن اس رپورٹ میں مزید کوئی تفصیل نہیں بتائی گئی ہے۔

شام میں جنگی کارروائیوں کی نگرانی کرنے والی شامی رصدگاہ برائے انسانی حقوق کے سربراہ رامی عبدالرحمان نے بتایا ہے کہ اسرائیلی طیاروں نے دمشق کے جنوب میں واقع کسوہ کے علاقے کو اپنے حملے میں نشانہ بنایا تھا۔ اس علاقے میں شامی حکومت کی اتحادی حزب اللہ ملیشیا اور ایرانی جنگجوؤں کے اسلحے کے گودام تھے۔تاہم ان کا کہنا ہے کہ ابھی یہ واضح نہیں ہوا کہ آیا ان گوداموں کو بھی حملے میں نشانہ بنایا گیا تھا۔

واضح رہے کہ اسرائیل ایک سے زیادہ مرتبہ شام میں ایران کو فوجی طاقت کے ذریعے قدم جمانے سے روکنے کے عزم کا اظہار کرچکا ہے۔اس نے شام میں ایران اور اس کی اتحادی لبنانی شیعہ ملیشیا حزب اللہ کے ٹھکانوں پر سیکڑوں فضائی حملے کیے ہیں لیکن اس نے ان میں سے اکا دکا حملوں ہی کا اعتراف کیا ہے۔