.

سویڈن معاہدے پر عمل درامد کے لیے بات چیت ، مارٹن گریفتھس صنعاء میں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے لیے اقوام متحدہ کے خصوصی ایلچی مارٹن گریتفتھس ایک بار پھر دارالحکومت صنعاء پہنچ رہے ہیں جہاں وہ سویڈن معاہدے پر عمل درامد کے حوالے سے باغیوں کے ساتھ بات چیت کریں گے۔

ذرائع کے مطابق گریفتھس کی حوثی قیادت کے ساتھ ملاقات میں قیدیوں کے تبدلے کا سمجھوتا زیر بحث آئے گا جس پر ابھی تک عمل درامد نہیں ہو سکا۔ اس کے علاوہ الحدیدہ شہر کی صورت حال وار وہاں سے حوثیوں کے عدم انخلا پر بھی بات چیت ہو گی۔

دوسری جانب یمن کے وزیر اطلاعات معمر الاریانی نے الزام عائد کیا ہے کہ ایرانی حمایت یافتہ حوثی ملیشیا گذشتہ ماہ سویڈن کے دارالحکومت اسٹاک ہوم میں ہونے والے امن معاہدے کو ناکام بنانے کی سازش کررہی ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ ‌کے مطابق الاریانی نے "ٹوئٹر" پر پوسٹ کردہ ایک بیان میں کہا کہ حوثیوں کی طرف سے سیاسی اور ابلاغی پروپیگنڈے کے ساتھ ساتھ یمن میں جنگ بندی معاہدے کی نگرانی کے لیے جنرل پیٹرک کمائرٹ کے قافلے پر حملہ کرکے سویڈن سمجھوتے کو ناکام بنانے کی کوشش کی گئی۔ ان کا کہنا تھا کہ سمجھوتے میں یہ طے تھا کہ حوثی ملیشیا الحدیدہ شہر، بندرگاہ اور تین دیگر بندرگاہوں سے نکل جائے گی مگر اس کے باوجود حوثی ملیشیا اپنی جگہ موجود ہے۔

یمنی وزیر کے مطابق حوثی ملیشیا کی منافقانہ پالیسی کھل کر سامنے آگئی ہے۔ حوثی باغی اقوام متحدہ کے جنگی بندی کی نگرانی کے قائم مشن کے کام میں بھی رکاوٹیں کھڑی کر رہے ہیں۔ ان کے چال چلن اور دیگر جرائم کا صاف پتا چل گیا ہے۔ حوثیوں نے اپنی حکمت عملی واضح‌ کر دی ہے۔ وہ ہرصورت میں سویڈن معاہدے کو کامیاب بنانے کے بجائے ناکام بنانے پر تلے ہوئے ہیں۔