.

دمشق کے قریب اسرائیلی بمباری سے ایرانیوں سمیت 21 ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

منگل کے روز اسرائیلی فوج کے شام میں کئے گئے حملوں میں ایرانیوں سمیت 21 افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔

شام میں انسانی حقوق کے لیے کام کرنے والے ادارے 'ہیومن رائٹس آبزر ویٹری' کے مطابق منگل کے روز دمشق اور جنوبی شام میں متعدد مقامات پر اسرائیلی جنگی طیاروں نے بمباری کی جس کے نتیجے میں ایرانیوں سمیت 21 افراد ہلاک ہوگئے۔

انسانی حقوق گروپ کے مطابق اسرائیلی جنگی طیاروں نے دمشق میں میزائل کے ڈپوئوں، اسلحہ اور ایرانی ملیشیا کے ٹھکانوں کو نشانہ بنایا گیا۔ شام کے جنوبی علاقوں میں شام کی فضائی دفاع کے مرکز کو نشانہ بنایا گیا۔

انسانی حقوق کے آبزرور رامی عبدالرحمان نے بتایا کہ اسرائیلی طیاروں کی بمباری سے شام میں ہلاکتوں میں اضافہ ہوا ہے۔ زیادہ تر کا تعلق ایرانی ملیشیا سے بتایا جاتا ہے۔

انہوں نے بتایا کہ اسرائیلی بمباری سے 15 غیرملکی جنگجو جن میں 12 ایرانی فوج کے اہلکار شامل ہیں مارے گئے ہیں۔

تین دوسرے افراد کی شناخت نہیں ہوسکی جب کہ ہلاک ہونے والے چھ افراد شامی فوج کے اہلکار بتائے جاتے ہیں۔

قبل ازیں سیرین آبزر ویٹری نے 11 ایرانی جنگجوئوں‌کی ہلاکت کی تصدیق کی تھی۔

ادھر اسرائیلی فوج کا کہنا ہے کہ اس نے شام میں ایرانی اہداف کو نشانہ بنانا شروع کر دیا ہے۔

اسرائیل کی دفاعی افواج (آئی ڈی ایف) کا کہنا ہے کہ اس کا آپریشن قدس فورس کے خلاف ہے جو کہ ایرانی پاسداران انقلاب کا سمندر پار ایک یونٹ ہے۔

اسرائیل نے اس حوالے سے مزید تفصیلات فراہم نہیں کی ہیں تاہم شام کے دارالحکومت دمشق کے ارد گرد پیر کی صبح حملوں کی اطلاعات ہیں۔

دوسری جانب شام کی سرکاری نیوز ایجنسی صنعا کا کہنا ہے کہ ملک کے فضائی دفاع نے جنوب میں ’اسرائیل کے ایک فضائی حملے‘ کو پسپا کر دیا ہے۔