.

نیتن یاہو کا قطری عطیات کی غزہ منتقلی کو منجمد کرنے کا فیصلہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیلی میڈیا کے مطابق وزیراعظم بنیامین نیتن یاہو نے متعلقہ اداروں کو ہدایت کی ہے کہ قطر کی جانب سے مالی رقوم کی غزہ پٹی منتقلی کو منسوخ کر دیا جائے۔

نیتن یاہو کا یہ فیصلہ غزہ میں حالیہ جارحیت کے حوالے سے سکیورٹی اداروں کے سربراہان کے ساتھ ہونے والی مشاورت کے بعد سامنے آیا ہے۔ اس سلسلے میں تازہ ترین واقعے میں ایک اسرائیلی افسر زخمی ہو گیا جب کہ ایک فلسطینی جاں بحق اور چار زخمی ہوئے۔

یاد رہے کہ قطری عطیات کی پہلی قسط نومبر 2018 میں غزہ پٹی منتقل کی گئی تھی۔ اس موقع پر نیتن یاہو کو اتحادی ارکان اور اپوزیشن کی جانب سے شدید تنقید کے طوفان کا سامنا کرنا پڑا تھا جن کے خیال میں اسرائیلی وزیراعظم نے حماس کے سامنے ہتھیار ڈال دیے۔

قطری عطیات کی پہلی قسط ان مرکزی عوامل میں سے تھی جنہوں نے نیتن یاہو کی حکومت کو عدم استحکام کے خطرے سے دوچار کیا۔ اس قسط کی منتقلی کی اجازت دیے جانے پر اسرائیلی وزیر دفاع حکومتی اتحاد سے علاحدہ ہو گئے۔ انہوں نے غزہ سے متعلق اُس وقت کی اسرائیلی پالیسی کو "غفلت آمیز" قرار دیا تھا۔