حوثی باغی بار بار سویڈن جنگ بندی معاہدے کی خلاف ورزیاں کررہے ہیں: خالد بن سلمان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکا میں متعین سعودی عرب کے سفیر شہزادہ خالد بن سلمان نے یمن کے حوثی باغیوں کو سویڈن جنگ بندی سمجھوتے کی بار بار خلاف ورزیوں پر شدید تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ ایرانی حمایت یافتہ حوثیوں کا طرز عمل مفاہمانہ نہیں بلکہ وہ بار بار جنگ بندی معاہدے کی خلاف ورزیاں کررہے ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق سماجی رابطے کی ویب سائیٹ'ٹوئٹر' پر پوسٹ کی گئی متعدد ٹویٹس میں سعودی سفیر نے عالمی برادری پر زور دیا کہ وہ یمن میں دیر پا امن کے قیام کے لیے اپنی ذمہ داریاں پوری کرے اور یمن میں جنگ بندی معاہدے کو کامیاب بنانے کے لیےضمانت فراہم کرے۔

بدھ اور جمعرات کی رات ٹویٹس میں شہزادہ خالد بن سلمان نے کہا کہ سعودی عرب کی قیادت میں سرگرم عرب فوجی اتحاد اسٹاک ہوم جنگ بندی معاہدے کوعملی شکل دینے کے لیے ہرممکن تعاون کررہا ہے مگر دوسری جانب حوثی باغی برادر یمنی عوام کو مایوسی کے اندھیروں میں دھکیل رہے ہیں۔

شہزادہ خالد بن سلمان نے اقوام متحدہ پر زور دیا کہ وہ اسٹاک ہوم معاہدے پرعمل درآمد ناکام بنانے اور معاہدے کی شرایط کی پاسداری سے فرار اختیار کرنے والوں کے خلاف سخت کارروائی کرے۔ ان کا کہنا تھا کہ حوثیوں کی طرف سے اقوام متحدہ کے مبصر مشن پر توپ خانے سے گولہ باری سے ثابت ہوتا ہے کہ حوثی ایک سوچے سمجھے منصوبے کے تحت سویڈن میں طے پائے جنگ بندی معاہدے کی پاسداری سے راہ فرار اختیار کر رہےہیں۔

سعودی سفیر نے کہا کہ ہم حوثیوں کی غیرآئینی سرگرمیوں پر نظررکھے ہوئے ہیں۔ لاکھوں یمنی عوام کوحوثیوں کی دہشت گردی کے رحم وکرم پر نہیں‌چھوڑا جاسکتا۔ جنگ بندی معاہدے سے رو گردانی پرعالمی برادری کو حوثیوں کے خلاف سخت اقدامات کرنا چاہئیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں