.

اقوام متحدہ کے ایلچی سے حوثیوں کے وعدے، یمنی حکومت کی جانب سے شکوک کا اظہار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ہالینڈ سے تعلق رکھنے والے ریٹائرڈ جنرل پیٹرک کمائرٹ اقوام متحدہ کے مبصرین کی ٹیم کے ساتھ یمن کے شہر الحدیدہ واپس آ گئے ہیں۔ وہ اسٹاک ہوم معاہدے پر عمل درامد کی نگرانی کے لیے مشترکہ رابطہ کار کمیٹی میں دوبارہ کام شروع کریں گے۔

یمنی حکومت کے ترجمان راجح بادی نے انکشاف کیا کہ کمائرٹ کی واپسی حوثی ملیشیا کی جانب سے اقوام متحدہ کے خصوصی ایلچی مارٹن گریفتھس کو کرائی گئی اُس یقین دہانی کے بعد ہوئی جس میں باغیوں نے اسٹاک ہوم معاہدے پر عمل درامد کا وعدہ کیا ہے۔ تاہم راجح بادی نے باور کرایا کہ حوثی ملیشیا اپنے وعدوں کو پورا نہیں کرے گی۔

ادھر یمنی وزیراعظم ڈاکٹر معين عبدالملک نے عدن میں الحدیدہ کے گورنر اور الحدیدہ میں نئی صف بندی کی کمیٹی میں شامل حکومتی ارکان سے ملاقات کی۔ ملاقات میں جنرل کمائرٹ کی سربراہی میں سویڈن معاہدے پر عمل درامد کی نگراں کمیٹی کی کارروائیوں اور کوششوں کا جائزہ لیا گیا۔

اس سے قبل کمائرٹ نے الحدیدہ صوبے میں نئی صف بندی کی کمیٹی میں شامل حکومتی ٹیم سے عدن میں ملاقات کی۔ ملاقات کا مقصد اسٹاک ہوم سمجھوتے پر عمل درامد کے سلسلے میں الحدیدہ میں نئی صف بندی کے حوالے سے جاری پیش رفت کو زیر بحث لانا تھا۔