فلسطینی اتھارٹی کا اقوام متحدہ سے غربِ اردن میں فوجی مبصر تعینات کرنے کا مطالبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

فلسطین نے اقوام متحدہ سے دریائے اردن کے مقبوضہ مغربی کنارے کے علاقے اور مشرقی بیت المقدس میں مستقل طور پر بین الاقوامی فورس تعینات کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

فلسطین کی اس درخواست سے ایک روز قبل ہی اسرائیل نے مغربی کنارے کے شہر الخلیل میں تعینات مبصر فورس کی کارروائیاں معطل کرنے کا اعلان کیا تھا۔

فلسطین کے اعلیٰ مذاکرات کار صائب عریقات نے اقوام متحدہ سے مطالبہ کیا ہے کہ اس کو اسرائیل کے غاصبانہ قبضے کے خاتمے تک فلسطینی عوام کے تحفظ اور سلامتی کی ضمانت دینی چاہیے۔

دریں اثناءاسرائیلی وزیراعظم بنیامین نیتن یاہو کے دفترنے کہا ہے کہ الخلیل میں عارضی بین الاقوامی موجودگی ( عالمی مبصر مشن ، ٹی آئی پی ایچ ) کے مینڈیٹ میں توسیع نہیں کی جائے گی ۔اس نے کہا تھا کہ ’’ہم ایسی کسی بین الاقوامی فورس کی موجودگی کی اجازت نہیں دیں گے جو ہمارے ہی خلاف کام کرے‘‘۔

ٹی آئی پی ایچ کے تحت غیر مسلح سول مبصرین کو 1997ء میں تعینات کیا گیا تھا اور وہ کوئی اکیس سال تک الخلیل میں تعینات کیا گیا تھا۔ شہر کے عین وسط میں سیکڑوں یہودی آبادکاروں کو بسایا گیا ہے ۔اسرائیلی فوجی مستقل طور پر ان کا پہرا دیتے ہیں۔اس شہر میں فلسطینیوں کی آبادی کی تعداد دو لاکھ سے زیادہ ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں