یمن: تعز میں‌ بم دھماکے سے متعدد افراد ہلاک اور زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یمن کی جنوب مغربی گورنری تعز میں المخا کے شہر کے وسط میں موجود بازار میں گذشتہ شب ہونے والے ایک بم دھماکے کے نتیجے میں کم سے کم چھ افراد جاں بحق اور 20 زخمی ہوگئے۔

'العربیہ' چینل کے مطابق یہ دھماکہ اس وقت کیا گیا جب بازار میں صحافیوں کا ایک گروپ موجود تھا۔ عینی شاہدین نے بتایا کہ حملے میں صحافیوں کو نشانہ بنانے کی کوشش کی گئی تھی۔ بم المخا اور عدن کے درمیان بس سروس کے اسٹیشن پر ایک کیفے کے قریب نصب کیا گیا تھا۔

ادھر سوموار کے روز مغربی تعز میں حوثیوں نامعلوم افراد کی فائرنگ سے مقبنہ کے مقام پر ایک خاتون اپنے گھر کے سامنے جاں‌بحق ہوگئی۔

مقامی ذرائع نے بتایا کہ وجیہ احمد محمد اپنے گھر کے باہر کام کررہی تھی کہ اچانک ایک گولی اس کے سرمیں لگ گئی جس کے نتیجے میں موقع پر ہی اس کی موت واقع ہوگئی۔خیال رہے کہ حوثی ملیشیا کی طرف سے عزلہ القحیفہ کے مقام پر شہریوں کو نشانہ بنانے کے واقعات میں تیزی کے ساتھ اضافہ ہو رہا ہے۔

مقتولہ خاتون یمنی فوج کے بریگیڈ پانچ کی بٹالین 145 کے سربراہ علی السیلانی کی اہلیہ ہیں۔۔ یہ بریگیڈ جبل حبشی اور مقبنہ کے درمیان واقع ہے۔

انسانی حقوق کی تنظیموں کے مطابق گذشتہ برس حوثیوں کی اندھی گولیوں کے نتیجے میں 100 شہری جاں‌بحق ہوئے جن میں‌بیشتر خواتین اور بچے شامل تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں