.

حوثیوں نے اب میں ‌500 اساتذہ برطرف کر کے ان کی جگہ اپنے وفادار بھرتی کرلیے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں حوثی ملیشیا نے اب گورنری میں اسکولوں کے 500 مردو خواتین اساتذہ کو ان کی ملازمتوں سے نکال کر ان کی جگہ اپنے وفادار بھرتی کر لیے۔ اس کے ساتھ ساتھ گورنری کی مختلف ڈاریکٹوریٹس میں سیکڑوں اساتذہ کے اسکیل کم کر دیے گئے ہیں۔

مقامی خبر رساں ایجنسی "خبر" کے مطابق حوثی ملیشیا نے انب گورنری میں پانچ سو کے قریب مردو خواتین اساتذہ کو ان کی ملازمتوں سے برخواست کرنے کی تیاری مکمل کر لی ہے اور ان کی جگہ نئے اور اپنے وفادار بھرتی کر کرنے شروع کر دیے ہیں۔

ذرائع کے مطابق حوثیوں کی طرف سے اس انتقامی حربے کے خلاف عوامی حلقوں اور محکمہ تعلیم کے ملازمین میں سخت غم وغصے کی فضا پائی جا رہی ہے۔ شہریوں‌ نے حوثیوں کے اس اقدام کو غیر قانونی اور سیاسی انتقام کی بدترین شکل قرار دیا ہے۔

اب گونری میں حوثیوں‌ کی طرف سے مقرر کردہ ڈائریکٹر تعلیم محمد درھم الغزالی نے کہا ہے کہ 490 اساتذہ کے خلاف کارروائی کرنے کے بعد ان میں سے بعض کے اسکیل کم کرنے اور باقی کو ملازمت سے برطرف کرنے کا عمل مکمل کر لیا ہے۔

خیال رہے کہ گذشتہ برس مئی میں حوثی ملیشیا نے ان گورنری کے محکمہ تعلیم کے1100 ملازمین سمیت 2600 ملازمین کو ان کی نوکریوں سے نکال کر ان کی جگہ اپنے وفادار بھرتی کر لیے تھے۔