.

لبنان میں کابینہ کی تشکیل کے بعد حکومت کا پہلا اجلاس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لبنان میں ہفتے کے روز بعبدا پیلس میں نئی حکومت کا پہلا اجلاس منعقد ہو رہا ہے۔ اجلاس سے قبل ارکان نے صدر، وزیراعظم اور اسپیکر کے ساتھ یادگاری تصاویر بنوائیں۔

لبنانی پارلیمنٹ کے اسپیکر نبیہ بری نے باور کرایا ہے کہ حکومت کی تشکیل میں تاخیر کا سبب بننے والی رکاوٹیں اندرونی تھیں۔ انہوں نے کہا کہ وہ فوری طور پر حکومت پر اعتماد کے اظہار کے لیے اجلاس طلب کریں گے۔ نبیہ بری کے مطابق نئی حکومت میں ایسے نام شامل ہیں جو معتبر اور اچھی ساکھ کے حامل ہیں۔ انہوں نے تصدیق کی کہ پارلیمنٹ میں کوئی بھی پارٹی 11 وزیروں کی تعداد نہیں رکھتی۔

دوسری جانب امریکی وزارت خارجہ نے اپنے ایک بیان میں لبنان میں نئی حکومت کی تشکیل کا خیر مقدم کیا ہے۔ تاہم بیان میں حکومت میں حزب اللہ ملیشیا کے ہاتھوں میں وزارتوں پر تشویش کا اظہار کیا گیا ہے۔ امریکی وزارت خارجہ نے حزب اللہ کو دہشت گرد تنظیم قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ وہ وزارتوں سے ناجائز فائدہ اٹھا سکتی ہے۔ بیان میں لبنان سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ وہ پڑوسی ممالک کے معاملات میں مداخلت نہ کرے۔

دہشت گردی کی فنڈنگ سے متعلق امور کے لیے امریکی وزیر خزانہ کے معاون نے حزب اللہ کو خبردار کیا ہے کہ اگر اس نے وزارت صحت کے لیے مختص مالی رقوم کو اپنے اداروں کے واسطے استعمال کیا تو اس کے بھیانک نتائج سامنے آئیں گے۔