حوثیوں کی بلیک میلنگ، عالمی کمپنی کا یمن چھوڑنے پرغور

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یمن میں ایران نواز حوثی باغیوں کی جانب سے بین الاقوامی کمپنیوں کو بلیک میل کرنے کا سلسلہ جاری ہے جس کے باعث کئی کمپنیاں صنعاء سے واپس جا چکی ہیں۔ حوثیوں کی بلیک میلنگ کی شکار ایک عالمی ٹیلی کام کمپنی'MTN ' نے بھی باغیوں کی مداخلت سے تنگ آ کر یمن چھوڑنے پر سنجیدگی سے غور شروع کیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کےمطابق کمپنی کے ایک ذمہ دار ذریعے کا کہنا ہے کہ کمپنی کو بلیک میلنگ کا سامنا ہے جس کے بعد فرم کے واپس جانے کی تیاری کررہی ہے۔ ذریعے کا کہنا ہے کہ حوثیوں کی طرف سے صنعاء میں ٹیلی کمیونیکیشن کمپنی پر بھاری ٹیکس عاید کیے ہیں اور کمپنی کے امور میں مسلسل داخلت کی کوشش کی جا رہی ہے۔

مقامی اخباری اطلاعات کے مطابق صنعاء کی ایک عدالت نے کمپنی پر نئے ٹیکس عاید کرنے اور کمپنی کے مال میں سے اربوں ریال کو تحویل میں لینے کا حکم دیا گیا۔

ذرائع کا کہناہے کہ حوثی ملیشیا کی طرف سے ماتحت عدالت پر کمپنی کے خلاف ظالمانہ فیصلہ صادر کرانے کے لیے دبائو ڈالا گیا اور کمپنی کے 20 کروڑ ڈالر پر ہاتھ صاف کرنے کی کوشش کی گئی۔ یہ سب کچھ نام نہاد انٹیلی جنس اداروں کے اختیارات کے ناجائز استعمال کے ذریعے کیا گیا ہے۔

حوثیوں‌ کی طرف سے دبائو کے بعد 'ایم ٹی این' کو سابقہ برسوں کے دوران غیرمعمولی خسارے کا سامنا کرنا پڑا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں