.

اردن میں سابق عہدیداروں سمیت 54 افراد پر کرپشن کے الزام میں فرد جرم عاید

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اردن کے پراسیکیوٹر جنرل نے اسٹیٹ سیکیورٹی عدالت میں سابق حکومتی عہدیداروں سمیت 54 افراد کے خلاف کرپشن کے الزام میں فرد جرم عاید کرنے کی سفارش کی ہے جس کے بعد ملزمان کے خلاف فرد جرم عاید کی گئی ہے۔ ملزمان میں سابق وزیر برائے پانی و بجلی، ڈائریکٹر جنرل کسٹمز اور دیگر اعلیٰ عہدیدار شامل ہیں۔

خبر رساں اداروں کے مطابق اردن میں بدعنوانی کی روک تھام کے حوالے سے ہونے والی تحقیقات کے دوران سابق وزیر پانی منیر عویس، کسٹمز ڈائریکٹر میجر جنرل ریٹائرڈ وضاح الحمود، سابق مشیر وھب العواملہ پر 'الدخان المقلد' کارخانہ کیس میں کرپشن کے مرتکب پائے گئے ہیں۔

پراسیکیوٹر جنرل کا کہنا ہے کہ مُلزمان نے عہدے اور منصب کا ناجائز استعمال کر کے کسٹمز کے شعبے میں اسملگنگ، ٹیکس چوری، رشوت وصولی اور خود رشوت دینے جیسے جرائم کا ارتکاب کیا۔

سابق حکومتی عہدیداروں سمیت ان تمام ملزمان کو گذشتہ ماہ حراست میں لیا گیا تھا۔ حال ہی میں ایک اردنی کاروباری شخصیت کوترکی نےاردن کے حوالے کیا تھا۔ مرکزی ملزم عوانی مطبع مختلف اداروں کے اعزازی سربراہ رہ چکے ہیں۔ ملزمان میں چھ بدستور مفرور ہیں۔