.

اپریل کے اواخر تک شام سے انخلا کی تیاری کر رہے ہیں: امریکی فوج

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی فوج نے اعلان کیا ہے کہ وہ اپریل کے اواخر تک شام سے اپنی تمام فورسز کو واپس بلانے کی تیاری کر رہی ہے۔ یہ بات جمعرات کے روز امریکی اخبار وال اسٹریٹ جنرل نے بتائی۔

اس سے قبل امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ بدھ کے روز یہ کہہ چکے ہیں کہ بین الاقوامی اتحاد کے ممالک شام اور عراق میں "داعش" تنظیم کا خاتمہ کرنے میں کامیاب ہو گئے۔

واشنگٹن میں مذکورہ اتحاد کے ایک اجلاس کے دوران انہوں نے کہا کہ "ہم نے عراق اور شام میں داعش کے کئی کمانڈر ہلاک کر ڈالے"۔ ٹرمپ نے باور کرایا کہ تنظیم کے غیر فعّال گروپوں کا تعاقب جاری رہے گا۔

امریکی صدر کے مطابق غالبا آئندہ ہفتے شام اور عراق میں داعش تنظیم پر 100% قابو پانے کا اعلان کر دیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ "ہماری افواج داعش پر قابو پانے کے فوری بعد واپس لوٹ آئیں گی"۔

ٹرمپ نے کہا کہ "ہم نے 50 لاکھ شہریوں کو اس شدت پسند تنظیم کے تسلط سے آزاد کرایا"۔

امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو کی جانب سے کہا گیا ہے کہ شام سے امریکی افواج کے انخلا کے باوجود واشنگٹن داعش تنظیم کے خلاف برسرجنگ بین الاقوامی اتحاد کی قیادت جاری رکھے گا۔

بدھ کے روز واشنگٹن میں بین الاقوامی اتحاد کے رکن ممالک کے وزراء خارجہ کے سامنے پومپیو نے کہا کہ شام سے انخلا کا یہ ہر گز مطلب نہیں کہ شدت پسندوں کے خلاف امریکا کی معرکہ آرائی اختتام پذیر ہو گئی ہے۔

واشنگٹن نے دسمبر میں شام سے امریکی افواج کے انخلا کا اچانک اعلان کر دیا تھا جس پر امریکا کے حلیف ممالک کو کئی مسائل کا سامنا ہے۔