یمن کے صوبے الضالع میں حوثیوں کے ہاتھوں قبائلی شخصیت کا گھر تباہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یمن میں حوثی ملیشیا نے جنوبی صوبے الضالع کے ضلع الحشاء میں ایک قبائلی شخصیت کا گھر دھماکے سے اڑا دیا۔ ادھر علاقے کے لوگوں اور عوامی مزاحمت کاروں نے حوثیوں کی جانب سے ضلع میں متعدد مقامی افراد کو اغوا کرنے کی کوشش ناکام بنا دی۔

مقامی آبادی کے مطابق حوثی ملیشیا نے الحشاء ضلع کے گاؤں نجد المکلہ میں حملہ کر کے شیخ عبدالجلیل احمد الحذیفی کے گھر کو گولہ بارود کے ذریعے تباہ کر دیا۔ اس دوروان حوثی باغیوں نے علاقے میں عسکری کمہم جوئی کی کوشش کی تاہم مقامی افراد اور عوامی مزاحمت کاروں نے باغیوں کی کارروائی کو پسپا کرتے ہوئے انہیں پیچھے ہٹ جانے پر مجبور کر دیا۔

شیخ الحذیفی کے گھر کو دھماکے سے اڑائے جانے کے بعد مقامی افراد اور عوامی مزاحمت کاروں کی حوثیوں کے ساتھ شدید جھڑپیں ہوئیں۔

الضالع صوبے کے پولیس سربراہ ابراہیم الحذیفی کے مطابق اِب صوبے کی سمت سے آنے والے حوثی باغی علاقے کے کئی لوگوں کو گرفتار کرنا چاہتے تھے۔ انہوں نے عسکری قیادت اور عرب اتحاد سے مطالبہ کیا کہ وہ علاقے میں یمنی فوج اور عوامی مزاحمت کاروں کو سپورٹ کریں۔

انسانی حقوق کی ایک رپورٹ کے مطابق حوثی ملیشیا اپنے مخالفین کے گھروں کو دھماکے سے تباہ کرنے، جبری ہجرت پر مجبور کرنے، ملک میں فرقہ واریت کی بنیاد پر تطہیر، بقیہ ماندہ آبادی کو خوف زدہ کرنے اور اپنے سامنے جھکانے اور حریفوں سے انتقام لینے کی کارروائیوں کا سہارا لیتی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں