.

'ایس ڈی ایف' کا شام میں 'داعش' کے خلاف فیصلہ کن آپریشن کا آغاز

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام میں داعش کےخلاف سرگرم امریکی حمایت یافتہ 'سیرین ڈیموکریٹک فورس' (ایس ڈی ایف) نے 'داعش' کے خلاف آخری معرکے کا آغاز کردیا ہے۔ 'ایس ڈی ایف' کو اس کارروائی میں امریکا اور اس کےاتحادیوں کی معاونت بھی حاصل ہے۔

سیرین ڈیموکریٹک فورس کے شعبہ اطلاعات کے انچارج مصطفیٰ بالی نے ایک بیان میں کہا کہ گذشتہ شب داعش کے خلاف ھجین میں آخری لڑائی کا آغاز کردیا گیا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ شام میں داعش کی باقیات کو ختم کرنے تک لڑائی جاری رہےگی۔

مصطفیٰ بالی نے کہاکہ حالیہ 10 ایام انتہائی صبر آزما گذرے ہیں۔ عراق کی سرحد پر موجود قصبوں سے شہریوں کو پرامن طورپر محفوظ مقامات پر منتقل کیا گیا اور اس دوران 'داعش' کے حملوں کا سامنا بھی ہوتا رہا۔ جنگ سے متاثرہ علاقوں سے تقریبا 20 ہزار افراد نقل مکانی پرمجبور ہوئے ہیں۔

'ایس ڈی ایف' کے آپریشن کا ہدف ھجین کا علاقہ دریائے فرات کےمشرقی کنارے پر انتظامی طورپر البوکمال گورنری کا حصہ ہے جو شام کے مشرقی صوبے دیر الزور میں آتا ہے۔

ھجین البوکمال سے 35 کلو میٹر دور اور دیر الزور سے 110 کلو میٹر کےفاصلے پر وقع ہے۔ سنہ 2004ء کے اعدادو شمار کے مطابق اس کی آبادی ایک لاکھ افراد پر مشتمل ہے۔

ھیجن کا رقبہ 250 مربع کلو میٹر پر ہےجس کا بیشتر حصہ صحرا پر مشتمل ہے۔