امریکا کے مہیا کردہ لیزر گائیڈڈ میزائل لبنانی فوج کے حوالے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

امریکا نے ایک کروڑ 60 لاکھ ڈالرز مالیت کے لیزر گائیڈڈ راکٹ ( میزائل ) بدھ کو لبنانی فوج کے حوالے کردیے ہیں۔

بیروت میں امریکی سفارت خانے نے ایک بیان میں کہا ہے کہ یہ میزائل امریکی فوج کے ایک ٹرانسپورٹ طیارے کے ذریعے لبنان بھیجے گئے ہیں اور یہ ماضی میں امریکا کی جانب سے مہیا کردہ اے 29 سپر ٹوکانو لڑاکا طیارے کے فلیٹ کا حصہ ہیں۔

واضح رہے کہ امریکا نے لبنانی فوج کو 2005ء کے بعد سے دو ارب 30 کروڑ ڈالرز سے زیادہ مالیت کی امداد مہیا کی ہے۔اس کا مقصد لبنان کی واحد قانونی دفاعی قوت کے طور پر فوج کو مضبوط بنانا ہے جہاں ایران کی حمایت یافتہ شیعہ ملیشیا حزب اللہ قومی فوج سے زیادہ طاقت اور اثر ورسوخ کی حامل ہے۔

ایرانی وزیر خارجہ جواد ظریف نے اسی ہفتے اس ننھے ملک کے دورے کے موقع پر کہا تھا کہ ان کا ملک لبنانی فوج کی مدد کو تیار ہے لیکن اس کے لیے یہ ضروری ہے کہ پہلے لبنان اس مدد کو قبول کرنے کی خواہش کا اظہار کرے ۔

حزب اللہ کے سربراہ سیّد حسن نصر اللہ نے بھی گذشتہ ہفتے کہا تھا کہ وہ ایران سے لبنانی فوج کے لیے فضائی دفاعی نظام خرید کرنے کو تیار ہیں اور اسے خطے میں ایک مضبوط فوج بنانے کے لیے درکار تمام آلات اور فوجی سازوسامان مہیا کرنے کے لیے کوششیں کرنے کو تیار ہیں۔

حسن نصر اللہ نے یہ بھی سوال کیا تھا کہ لبنان ایران کی پیش کش کو کیوں ’’ نظر انداز‘‘ کررہا ہے جبکہ ہماری گردنوں کی دوسروں کو پیش کش کررہا ہے۔ وہ امریکا کا حوالہ دے رہے تھے جس نے حزب اللہ کو دہشت گرد تنظیم قرار دے رکھا ہے اور ا س کے خلاف آئے دن نئی نئی پابندیاں عاید کرتا رہتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں