یمن : حوثیوں کے خلاف قبائلی مزاحمت حجّہ سے عمران تک پھیل گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یمن کے صوبے عمران میں عذر کے قبائل اعلانیہ طور پر حوثی ملیشیا کے خلاف برسر جنگ عوامی مزاحمت کاروں کے ساتھ شامل ہو چکے ہیں۔ قبائل نے حوثیوں کی حرض جانے والی امدادی سپلائی لائن منقطع کر کے باغیوں کی گاڑیاں تباہ کر دیں۔

تفصیلات کے مطابق بدھ کی شام عمران صوبے کے شمال میں واقع محاذ پر مقامی قبائل اور باغی حوثی ملیشیا کے درمیان معرکہ آرائی کا آغاز ہو گیا۔ دوسری جانب یمن کے شمال مغربی صوبے حجہ کے ضلع کشر کے مشرق میں بھی گھمسان کی لڑائی جاری ہے۔

عمران صوبے کی مذکورہ جھڑپیں اس وقت شروع ہوئیں جب حوثی ملیشیا نے قفلہ ضلع میں سودہ قبائل پر حملہ کیا۔ مقامی ذرائع کے مطابق یہ حملہ قبائل کی جانب سے اس مطالبے کے مسترد کیے جانے کے بعد کیا گیا جس میں قبائل سے کہا گیا تھا کہ وہ حجور کے علاقوں تک جانے والی حوثیوں کی کمک گزرنے کے لیے اپنے علاقوں کو کھول دیں۔ حجور میں مقامی قبائل اور حوثیوں کے درمیان معرکہ آرائی جاری ہے۔

یمنی میڈیا کے مطابق حوثیوں اور قبائلی عناصر کے درمیان ابھی تک زمینی لڑائی جاری ہے۔ اس دوران حوثیوں کے ہلاک ہونے اور قیدی بنائے جانے کے علاوہ بڑی تعداد میں فرار ہونے کی بھی اطلاعات ہیں۔

دوسری جانب العبیسہ کے علاقے میں حوثیوں اور حجور قبائل کے درمیان تین روز سے گھمسان کی لڑائی ہو رہی ہے۔ گزشتہ دو روز کے دوران قبائلیوں نے حوثیوں کو غیر معمولی نقصان پہنچاتے ہوئے پیش قدمی کو یقینی بنایا۔ قبائلیوں نے کشر ضلع کے مشرق میں واقع گاؤں القیم اور اس کے پہاڑوں کا کنٹرول حاصل کر لیا۔ لڑائی میں درجنوں حوثی ہلاک اور زخمی ہوئے جب کہ حجور قبائل کے جنگجوؤں نے 25 سے زیادہ مسلح حوثیوں کو قیدی بنا لیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں