محمد بن سلمان کا پورٹریٹ بنانے والے پاکستانی مصور سے العربیہ ڈاٹ نیٹ کی گفتگو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان بن عبدالعزیز کے پاکستان کے دورے کے موقع پر پاکستانی عوام کی جانب سے خیرمقدمی جذبات کا مختلف صورتوں میں اظہار سامنے آ رہا ہے۔ پاکستان کے لوگ سعودی ولی عہد کو ایک "عظیم مہمان" قرار دے رہے ہیں جن کا دورہ دونوں برادر ملکوں کے درمیان مشترکہ تعاون کی نئی آفاقیت کا حامل ہے۔

اس سلسلے میں العربیہ ڈاٹ نیٹ نے پاکستانی مصور وقاص احمد عشق سے بات چیت کی۔ وقاص کو 2017 میں اُس فہرست کے لیے منتخب کیا گیا جس میں دنیا بھر میں سب سے زیادہ با اثر شخصیات کے پورٹریٹ بنانے والے 10 سے زیادہ مصور شامل تھے۔ وقاص نے بتایا کہ انہوں نے گزشتہ ایام کے دوران گوشہ تنہائی اختیار کر کے شہزادہ محمد بن سلمان کا پورٹریٹ تیار کیا۔ انہوں نے اس حوالے سے اپنے پرمسرّت جذبات کا اظہار کرتے ہوئے بتایا کہ "سعودی اور پاکستانی عوام کے بیچ مضبوط اور قریبی تعلق ہے ،،، اس تاریخی تعلق کی گہرائی کے اظہار کے لیے فن ایک اہم وسیلہ ہے"۔

وقاص کے مطابق پینسل سے بنائے گئے پورٹریٹ کا حجم 22 ×30 انچ ہے اور اس کی تیاری میں 15 روز لگے۔

پاکستانی مصور کے مطابق وہ چاہتے تھے کہ اپنے انداز سے شہزادہ محمد بن سلمان کا خیرمقدم کریں۔ وقاص مملکت سعودی عرب میں شہزادہ محمد بن سلمان کے انقلابی اور اصلاحی اقدامات سے بہت زیادہ متاثر ہیں اور ان کی شخصیت کے بارے میں معلومات حاصل کرنے کے خواہاں رہتے ہیں۔ وقاص کہتے ہیں کہ انہوں نے پوری دنیا کی طرح سعودی ولی عہد کی قائدانہ صلاحیتوں کے بارے میں سن رکھا ہے۔ مصوری کے فن میں 15 سال سے زیادہ کا تجربہ رکھنے والا یہ پاکستانی فن کار اس سے قبل خادم حرمین شریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز کا پورٹریٹ بھی بنا چکا ہے۔

وقاص احمد عشق اب تک سعودی عرب نہیں گئے ، ان کی خواہش ہے کہ کسی دن ان کی یہ تمنا پوری ہو۔ وقاص کا کہنا ہے کہ پاکستانی عوام مملکت اور اس کے عوام سے محبت کرتے ہیں۔ پاکستانی مصور چاہتے ہیں کہ وہ اپنا بنایا ہوا پورٹریٹ سعودی ولی عہد کو پیش کریں تا کہ اس کے ذریعے سعودی عرب ، اس کی حکومت اور عوام کے لیے پاکستانی قوم کی گہری محبت کا اظہار ہو سکے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں