.

وڈیو : مسجد الازہر کے عقب میں دہشت گرد کے خود کو دھماکے سے اڑا دینے کا منظر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر میں پیر کی شب قاہرہ کے علاقے الدرب الاحمر میں مسجد الازہر کے عقب میں ہونے والے دھماکے کی فوٹیج سامنے آ گئی ہے۔ دھماکے کے نتیجے میں 3 پولیس اہل کار جاں بحق اور دو زخمی ہو گئے تھے۔

سکیورٹی کیمرے سے حاصل ہونے والی وڈیو میں 37 سالہ دہشت گرد الحسن عبداللہ سائیکل پر سوار نظر آ رہا ہے۔ اس دوران پولیس اہل کاروں نے قریب آ کر جوں ہی اسے دبوچا ، الحسن نے خود کو دھماکے سے اڑؑا دیا۔

وڈیو سے ظاہر ہوتا ہے کہ خود کش بم بار الحسن سائیکل پر سوار ہو کر مسجد الازہر کے عقب میں واقع آہنی دروازے سے اندر آیا تھا۔ اس کے پاس ایک بیگ میں دھماکا خیز آلہ موجود تھا اور اس نے اپنا چہرہ ماسک سے ڈھانپا ہوا تھا۔

مذکورہ دہشت گرد مجرمانہ ریکارڈ کا حامل ہے اور چند روز قبل الجیزہ کی ایک مسجد کے نزدیک دھماکے کی کوشش کر چکا ہے۔ وہ معزول صدر محمد مرسی کا حامی تھا اور الاخوان تنظیم کے ارکان کے مختلف ایونٹس میں شریک بھی ہو چکا ہے۔

سکیورٹی فورسز نے الحسن عبداللہ کا محاصرہ کر لیا تھا۔ اس دوران اسے پکڑنے پر دھماکا خیز مواد پھٹ گیا جس کے نتیجے میں مصری پولیس کے تین اہل کار اپنی جانوں سے ہاتھ دھو بیٹھے۔