بندرگاہوں اور سمندری سرحدوں کے حوالے سے قطر پر پابندی میں کوئی نرمی نہیں کی : امارات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

متحدہ عرب امارات میںFederal Transport Authority - Land & Maritime نے باور کرایا ہے کہ قطر کے ساتھ سمندری سرحدی راہ داریوں میں تعلقات منقطع کرنے کے حوالے سے اتھارٹی کے نوٹیفکیشن میں کوئی تبدیلی نہیں کی گئی ہے ،،، اور تمام اقدامات پر جوں کا توں عمل درامد ہو رہا ہے۔

اتھارٹی نے واضح کیا کہ قطر کے ساتھ سامان کی درآمد اور برآمد کے حوالے سے میڈیا میں جو کچھ آیا ہے وہ درست نہیں۔

اتھارٹی نے باور کرایا کہ وہ اس حوالے سے امارات میں تمام بندرگاہوں اور سمندری سرحدی راہ داریوں پر حکام کو وضاحت ارسال کرے گی۔

یہ تردید گزشتہ روز گردش میں آنے والی اس خبر کے بعد سامنے آئی ہے جس میں کہا جا رہا تھا کہ متحدہ عرب امارات نے قطر آنے جانے والے سامان کی کھیپ پر اس پابندی کو نرم کر دیا ہے جو دوحہ کے خلاف جاری سیاسی اور اقتصادی بائیکٹ کے سلسلے میں عائد کی گئی تھی۔

امارات، سعودی عرب، بحرین اور مصر نے دوحہ پر دہشت گردی کی سپورٹ کا الزام عائد کرتے ہوئے جون 2017 میں قطر کے ساتھ سفارتی اور تجارتی تعلقات منقطع کر لیے تھے۔

قطر نے تجارتی بائیکاٹ کے حوالے سے جولائی 2017 میں ورلڈ ٹریڈ آرگنائزیشن کو قانونی شکایت پیش کی تھی۔ گزشتہ ماہ امارات کی جانب سے بھی تنظیم کو قطر کے خلاف شکایت پیش کی گئی جس میں کہا گیا کہ دوحہ نے اماراتی مصنوعات پر پابندی عائد کر دی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں