عراق نے شام میں داعش کے 13 فرانسیسی کمانڈر اور جنگجو دھر لیے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

العربیہ کے ذرائع کے مطابق عراقی انٹیلی جنس نے شام کی اراضی کے اندر سکیورٹی آپریشن کے دوران داعش کے 13 فرانسیسی کمانڈر اور ارکان گرفتار کر لیے۔

سکیورٹی ذرائع نے یہ بھی بتایا ہے کہ عراقی انٹیلی جنس نے ملک میں داعش تنظیم کے سب سے بڑے فنڈنگ نیٹ ورک کو تحلیل کرنے میں کامیاب ہو گئی ہے۔

عراق کے مغربی صوبے انبار میں ایک قبائلی رہ نما قطری العبیدی نے اعلان کیا تھا کہ سرحدی علاقے الباغوز میں سیرین ڈیموکریٹک فورسز (ایس ڈی ایف) نے 150 داعشی ارکان کو عراقی فورسز کے حوالے کر دیا۔

دوسری جانب سکیورٹی امور کے ماہر ہشام الہاشمی نے اپنی ٹویٹ میں بتایا کہ مطلوبہ افراد کی پہلی کھیپ عراقی فورسز کے حوالے کر دی گئی ہے۔ ان افراد کو تحقیقات کی غرض سے حراست کے خصوصی مقامات منتقل کیا جائے گا۔ اس کے بعد انہیں عراقی عدالتوں میں پیش کر دیا جائے گا۔

ادھر سیرین ڈیموکریٹک فورسز کے ذمے دار مصطفی بالی نے توقع ظاہر کی ہے کہ شام کے مشرق میں داعش کے بچے کھچے عناصر کے زیر کنٹرول علاقے سے شہریوں کا انخلا جمعرات کے روز مکمل ہو کر لیا جائے گا۔ اس کے بعد ایس ڈی ایف داعش کی ان باقیات کے خلاف لڑائی کا آغاز کرے گی۔

سال 2017 میں پے درپے شکستوں کے بعد عراقی سرحد پر واقع داعش کے زیر قبضہ گاؤں الباغوز ،،، عراق اور شام میں تنظیم کا آخری مرکزی گڑھ بن گیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں