.

حوثی باغیوں کی صنعتی اور تجارتی مرکز کے بعد آٹے کے ملوں پر گولہ باری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے ساحلی شہر الحدیدہ میں حکومت اور ایران نواز حوثی باغیوں کے درمیان طے پائے جنگ بندی معاہدے کی خلاف ورزیاں جاری ہیں۔ گذشتہ روز حوثی جنگجوئوں‌نے الحدیدہ میں ایک صنعی اور تجارتی مرکز پر گولہ باری کے بعد آٹے کی ملوں اور غلے کے گوداموں پر بھی گولے برسائے جس کے نتیجے میں خوراک کے ڈپوئوں کو غیرمعمولی نقصان پہنچا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق یمنی فوج اور مزاحمتی قوتوں کی طرف سے جاری بیانات میں کہا گیا ہے کہ حوثی شدت پسندوں نے بحر الاحمر میں آٹے کی ملوں اور ان کے گوداموں‌پر 'ھاون' راکٹوں سے حملے کیے۔

بیان میں کہاگیا ہے کہ حوثیوں کی طرف سے داغے گئے ہاون راکٹوں کےحملوں میں عالمی ادارہ خوراک کے قائم کردہ خوراک کےڈپوئوں کو نقصان پہنچا ہے۔ خوراک کے یہ گودام 30 لاکھ یمنی باشندوں کو خوراک فراہم کرنے کے لیے بنائے گئے ہیں۔

قبل ازیں حوثی باغیوں‌نے"اخوان ثابت تجارتی" مرکز پر بھی گولہ باری کی اور اسے بھی نقصان پہنچایا گی۔