.

ایران میں بدعنوانی کے الزامات کے تحت سرکاری عہدیداروں کی گرفتاریاں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران کے ذرائع ابلاغ کے مطابق پولیس اور انٹیلی جنس حکام نے مالی بدعنوانی کےالزام میں متعدد سرکاری افسران کو حراست میں لیا ہے۔ ان میں کسٹمز کے ڈائریکٹر جنرل، دیگر کسٹم حکام اور بروکر شامل ہیں۔

خبر رساں ادارے'فارس' کی رپورٹ کے مطابق حراست میں لیے جانے والے سرکاری عہدیداروں میں ایرانی انٹیلی جنس کے شعبے کے بعض عہدیدار بھی شامل ہیں۔ ان پر رشوت وصول کرنے کاالزام عاید کیا گیا ہے۔

ایرانی وزارت انٹیلی جنس کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ گرفتار کیے گئے سرکاری ملازمین پر اشیائے صرف کی قیمتوں سے کھلواڑ کرنے اور کسٹم ٹیکس چوری کرنے کا الزام عاید کیا جاتا ہے۔ حکام گرفتار افراد سے کرپشن اور بدعنوانی کی تحقیقات کررہے ہیں۔

خیال رہے کہ ایران میں گذشتہ کئی ماہ سے کرپشن کے خاتمے کے لیے ایک مہم جاری ہے۔ گذشتہ برس نومبر میں‌ایرانی پولیس نے کرپشن کے الزامات میں 96 افراد کو سونے کی غیرقانونی تجارت کرنے اور قیمتوں میں اتارو چڑھائو میں‌ملوث بروکروں کو حراست میں لیا تھا۔