غزہ پٹی : حماس کے ٹھکانوں پر اسرائیلی فضائیہ کے حملے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی فوج نے جمعرات کے روز اعلان کیا ہے کہ اس کی فضائیہ نے غزہ پٹی میں حماس تنظیم کے کئی ٹھکانوں کو نشانہ بنایا ہے۔

قابض فوج نے اپنے ایک بیان میں بتایا کہ غزہ پٹی سے ایک آتش گیر گیسی غبارہ داغا گیا تھا جس سے اسرائیل میں ایک گھر کو نقصان پہنچا۔ اس کارروائی کا جواب دیتے ہوئے اسرائیلی فوج کے لڑاکا طیاروں اور ہیلی کاپٹروں نے غزہ پٹی کے وسطی علاقے میں حماس کے عسکری کمپاؤنڈ میں متعدد ٹھکانوں پر بم باری کی۔

عینی شاہدین نے بتایا کہ بدھ کو رات گئے ہونے والے حملے میں غزہ شہر کے جنوب میں واقع دیر البلح میں حماس کے عسکری ونگ عزالدین القسام بریگیڈز کے ایک مرکز کو بھی نشانہ بنایا گیا۔

حالیہ کارروائیوں میں کسی جانی نقصان کا اعلان نہیں کیا گیا۔

فلسطینیوں کی جانب سے وقتا فوقتا جنوبی اسرائیل کی جانب گیسی غبارے داغے جاتے ہیں جن میں دھماکا خیز اور آتش گیر مواد موجود ہوتا ہے۔ علاوہ ازیں غزہ پٹی اور اسرائیل کے درمیان سرحدی باڑ کے نزدیک ہفتہ وار احتجاج کا سلسلہ بھی جاری ہے۔

گزشتہ برس 30 مارچ کو شروع ہونے والے ان احتجاجی مظاہروں میں اب تک کم از کم 251 فلسطینی جاں بحق ہو چکے ہیں۔ ان میں زیادہ تر اسرائیل کے ساتھ سرحدی پٹی پر لقمہ اجل بنے جب کہ بقیہ افراد توپوں کی گولہ باری یا فضائی بم باری کا نشانہ بنے۔ اس پورے عرصے میں دو اسرائیلی فوجی بھی مارے گئے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں