.

نئے وزیر ٹرانسپورٹ کے تقرر سے متعلق افواہ نے مصری میڈیا کو لپیٹ میں لے لیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر میں اتوار کے روز مستعفی وزیر ٹرانسپورٹ ہشام عرفات کی جگہ نئے وزیر کے تقرر کی خبر پھیلنے پر افراتفری مچ گئی۔ عرفات نے گزشتہ ہفتے قاہرہ میں پیش آنے والے ٹرین حادثے کے بعد اپنے عہدے سے استعفا دے دیا تھا۔ اس ہول ناک حادثے میں 22 افراد ہلاک ہو گئے تھے۔

اتوار کے روز مچنے والی ہلچل کا آغاز اس وقت ہوا جب ٹویٹر پر "خالد عنخ آمون الاول" نامی ایک اکاؤنٹ سے گمنام طور پر یہ پیغام جاری کیا گیا کہ "انجینئر محمد وجيہ عبدالعزيز" کو نیا وزیر ٹرانسپورٹ مقرر کر دیا گیا ہے۔ پیغام میں مذکورہ وزیر کی عظیم کامیابیوں کا بھی تفصیل سے ذکر کیا گیا۔

یہ افواہ جلد ہی "نامعلوم ذرائع کے حوالے سے" مصر کے بعض ذرائع ابلاغ تک منتقل ہو گئی۔ تاہم بعد ازاں یہ بات سامنے آ گئی کہ یہ خبر جھوٹی ہے۔ بالخصوص خالد عنخ آمون الاول کی جانب سے اس اعلان کے بعد کہ "مذکورہ نئے وزیر ان کے متوفی والد ہیں "!۔

اس پر میڈیا نے یکسر طور پر اس خبر کی تردید کر دی۔