عوام کا ایرانی رجیم پراعتبار اٹھ چکا ہے:سابق صدر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایران کے سابق اصلاح پسند صدر محمد خاتمی نے کہا ہے کہ حکمرانوں کی روش کی وجہ سے ایرانی عوام کا حکومت پر اعتبار اُٹھ چکا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق بیرون ملک سفر پرپابندی کے شکار سابق صدر نے ایرانی پارلیمنٹ کے ایک گروپ سے خطاب میں کہا کہ ملک اس وقت انتہائی مشکل حالات اور دور سے گذر رہا ہے۔ عوام کا حکومت پر اعتبار مزید ختم ہو رہا ہے اور عوام میں مایوسی کے بادل مزید گہرے ہوتے جا رہے ہیں۔

سابق صدرنے کہا کہ اصلاح پسندوں کی طرف سے بھی آئندہ انتخابات میں عوام کو کوئی امید نہیں دلائی گئی۔ موجودہ حکومت بھی عوام میں مایوسی کم نہیں کرسکی۔

محمد خاتمی نے اصلاح پسندوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہاکہ آپ عوام کے ووٹوں سے پارلیمنٹ میں آئے ہیں۔عوام آپ سے صرف نعرے اور دعوے نہیں سنتے بلکہ حقیقی اصلاحات دیکھنا چاہتے ہیں۔

خیال رہے کہ ایران کے سابق صدر محمد خاتمی پر بیرون ملک سفر پر پابندی کے ساتھ ساتھ اندورن ملک ذرائع ابلاغ کو انٹرویو دینے پربھی پابندی ہےاور ایران میں ذرائع ابلاغ ان کی تصاویر اور ویڈیو نشر نہیں کرسکتے۔

محمد خاتمی اور سابق صدر علی اکبر ہاشمی رفسنجانی نے موجودہ ایرانی صدر حسن روحانی کی صدارتی انتخابات میں ان کی حمایت کی تھی۔

انہوں نے کہا کہ میں بہت مشکل موضوع پربات کررہا ہوں۔ عوام کا حکومت پر اعتماد اٹھ چکا ہے جس کے نتیجے میں عوام میں سخت مایوسی پائی جا رہی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ایرانی رجیم کو عوام کے حقوق کے حوالےسے لچک اور نرمی کا مظاہرہ کرنا چاہیے اور اسے اصلاحالات کے لیے تیار رہنا چاہیے۔ اس طرح حکومت اور عوام کےدرمیان بد اعتمادی ختم کی جاسکتی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں