شام : منبج میں داعش کا امریکی فوجیوں پر کار بم حملہ ، دوکرد جنگجو زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

شام کے شمالی شہر منبج میں امریکی فورسز پر خودکش کار بم حملہ کیا گیا ہے جس کے نتیجے میں امریکا کی اتحادی ملیشیا کے دو جنگجو زخمی ہوگئے ہیں۔برطانیہ میں قائم شامی رصدگاہ برائے انسانی حقوق کی اطلاع کے مطابق داعش نےا س حملے کی ذمے داری قبول کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔

رصدگاہ نے بتایا ہے کہ ایک انتہا پسند نے اپنی بارود سے بھری کار کو داعش مخالف اتحاد میں شامل امریکی فورسز کی بکتر بند گاڑیوں کے قافلے سے ٹکرا دیا تھا جس کے نتیجے میں زور دار دھماکا ہوا اور شامی جمہوری فورسز ( ایس ڈی ایف) کے دو جنگجو زخمی ہوگئے ہیں۔ امریکی اتحاد کے ترجمان سیان ریان نے اے ایف پی کو بتایا ہے کہ اس خودکش بم دھماکے میں کوئی امریکی فوجی ہلاک یا زخمی نہیں ہوا ہے۔

داعش نے اپنی خبررساں ایجنسی اعماق کی ویب سائٹ پر جاری کردہ بیان میں اس حملے کی ذمے داری قبول کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔ منبج اور اس کے نواحی علاقوں میں گذشتہ دو ماہ میں امریکا کی قیادت میں اتحادی فورسز پر یہ تیسرا بم حملہ ہے۔ 16 جنوری کو منبج شہر میں داعش کے ایک خودکش بم حملے میں چار امریکی فوجیوں سمیت 19 افراد ہلاک ہوگئے تھے۔

منبج گذشتہ چند برسوں کے دوران میں داعش کا مضبوط گڑھ رہا ہے لیکن امریکا کی قیادت میں اتحاد کے فضائی حملوں اور ایس ڈی ایف کی جنگی مہم میں داعشی جنگجو شکست سے دوچار ہوگئے تھے ۔اب ایس ڈی ایف سے وابستہ ایک فوجی کونسل اس کے انتظام کی ذمے دار ہے لیکن یہ شہر کرد ملیشیا اور پڑوسی ملک ترکی کے درمیان باعث نزاع بنا ہوا ہے۔ترکی کئی مرتبہ کرد ملیشیا کے شہر سے انخلا کا مطالبہ کر چکا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں