ایران اوراس کی حامی ملیشیاوں کے انخلاء سے شام کا بحران حل ہوگا: الجبیر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کے وزیر مملکت برائے خارجہ امور عادل الجبیر نے کہا ہے کہ شام میں جاری بحران کے حل کا مطلب ہے کہ وہاں سے ایران اوراس کی حامی ملیشیا کو نکال دیا گیا ہے۔

برسلز میں شام کی تعمیر کے لیے منعقدہ ڈونر کانفرنس سے خطاب میں سعودی وزیر نے کہا کہ شام میں دستور سازی کے بعد نئے سیاسی عمل پر سب کا اجماع ہے۔

انہوں‌ نے شامی پناہ گزینوں کی محفوظ اور باعزت واپسی کی ضرورت پر بھی زور دیا۔

عادل الجبیر کا کہنا تھا کہ شام کے مستقبل کے حوالے سے برسلز میں منعقدہ کانفرنس سے شام کے بحران کے دیر پا حل، خطے اور شام کے شام کے سیاسی تنازع کے حل میں مدد ملے گی۔

بعد ازاں'العربیہ' سے خصوصی بات چیت کرتےہوئے عادل الجبیر نے کہا کہ برسلزمیں ہونے والے اجلاس میں شام میں سیاسی بحران کے حل کے لیے دستوری کونسل کی تشکیل اور اس کے بعد ملک میں تمام نمائندہ قوتوں کے اشتراک سے سیاسی عمل شروع کرنے پر زور دیا گیا۔

انہوں نے کہا کہ برسلز کانفرنس میں پناہ گزینوں کی محفوظ اور باعزت واپسی کی ضرورت پر زور دیا گیا۔

ادھر کویتی وزیر خارجہ صباح خالد الصباح نے کہا کہ ان کے مُلک نے شام میں انسانی امداد کے لیے 30 کروڑ ڈالر فراہم کرنے کا وعدہ کیا ہے۔

انہوں‌ نے کہا کہ شام میں تعمیر نو سب سے پہلے ہونی چاہیے، اس کے بعد شفاف طریقے سے انتقال اقتدار کاعمل آگے بڑھایا جانا چاہیے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں