غزہ میں اسرائیلی فوج کی فائرنگ سے زخمی ہونے والا فلسطینی چل بسا!

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

غزہ میں سرحدی باڑ کے نزدیک احتجاجی مظاہرے کے دوران میں اسرائیلی فوجیوں کی فائرنگ سے زخمی ہونے والا فلسطینی نوجوان چل بسا ہے۔

غزہ کی وزارت ِ صحت نے اتوار کو ایک بیان میں بتایا ہے کہ غزہ کے علاقے بیت حانون میں ہفتے کی شب اسرائیلی فوجیوں کی فائرنگ سے 24 سالہ حبیب المصری شدید زخمی ہوگیا تھا۔اس کے سینے میں گولی لگی تھی ۔اسرائیلی فوجیوں کی گولیاں لگنے سے دو اور فلسطینی بھی زخمی ہوگئے تھے۔

غزہ کی پٹی میں مختلف مقامات پر ہفتے کی شب ہزاروں افراد نے اسرائیل کے خلاف احتجاجی مظاہرے کیے تھے۔اس دوران میں ان کی اسرائیلی فوجیوں سے جھڑپیں ہوئی ہیں ۔انھوں نے قابض فوجیوں کی جانب پتھراؤ کیا اور آتش گیر مواد پھینکا۔اس کے جواب میں اسرائیلی فوج کے لڑاکا طیارو ں نے غزہ کی پٹی کے جنوب میں حماس کی دو چوکیوں پر بمباری کی ہے۔

اسرائیلی فوج نے غزہ کی پٹی میں دو فلسطینی گروپوں کے مبیّنہ ٹھکانوں پر بھی فضائی حملے کیے تھے ۔اس نے الزام عاید کیا ہے کہ انھوں نے اسرائیل کی جانب غبارہ بم اڑائے تھے۔

واضح رہے کہ گذشتہ ایک سال کے دوران میں اسرائیلی فوج کی فائرنگ سے فضائی حملوں میں 257 فلسطینی شہید ہوچکے ہیں۔اس عرصے میں فلسطینیوں کے ساتھ جھڑپوں میں دو اسرائیلی فوجی ہلاک ہوئے ہیں۔جمعہ کو سرحدی علاقے میں مظاہرین پر اسرائیلی فوج کی فائرنگ سے دو الگ الگ واقعات میں دو فلسطینی شہید ہوگئے تھے۔

آیندہ ہفتے کے رو ز 30 مارچ کو غزہ کے سرحدی علاقے میں اسرائیل کے محاصرے اور جبروتشدد کی کارروائیوں کے خلاف جاری اس تحریک کو ایک سال ہوجائے گا۔اس موقع پر غزہ میں حماس کے رہ نما اسماعیل ہنیہ نے لوگوں سے بڑی تعداد میں ریلی میں شرکت کی اپیل کی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں