.

ضالع : یمنی فوج کی کارروائی میں حوثی کمانڈر سمیت 30 باغی ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے جنوبی صوبے ضالع میں سرکاری فوج نے بدھ کی شب گھات لگا کر ایک کارروائی کی جس کے نتیجے میں باغی حوثی ملیشیا کے 40 ارکان ہلاک اور زخمی ہو گئے۔

یمنی فوج کی سرکاری ویب سائٹ کے مطابق سرکاری فوج نے مریس کے علاقے کے مغرب میں جبلِ "مضرح" کے اطراف حوثی باغیوں کو پہلے تو دراندازی کرنے دی اور پھر ان کا محاصرہ کر کے اچانک حملہ کر دیا۔

گھات لگا کر کی جانے والی اس کارروائی میں حوثی ملیشیا کے 30 ارکان مارے گئے جن میں ایک زمینی کمانڈر ابراہیم الاکوع شامل ہے۔ علاوہ ازیں 10 حوثی زخمی بھی ہوئے جب کہ بقیہ فرار ہو گئے۔ مقتول کمانڈر ابراہیم الاکوع ضالع صوبے کا نائب نگراں اور صوبے کے محاذوں پر کمک کا ذمے دار تھا۔

ادھر عرب اتحاد کے لڑکا طیاروں نے بدھ کے روز رضمہ اور ضالع کے شمال میں حوثی ملیشیا کی کمک اور ٹھکانوں کو نشانہ بنانے کے لیے تین حملے کیے۔ کارروائی میں باغیوں کے تین عسکری یونٹ تباہ ہو گئے۔

ایک عسکری ذریعے کے مطابق اتحادی طیاروں نے اِب صوبے میں بھی رضمہ کی سپلائی لائن پر حوثیوں کی کمک پر بم باری کی۔ اس کے نتیجے میں دو ٹینک تباہ ہو گئے۔

حوثی ملیشیا مریس کے علاقے اور قعطبہ شہر میں داخل ہونے کی کوشش کے سلسلے میں صنعاء، ذمار اور حجہ سے کمک کو دمت، نادرہ اور سدہ کے علاقوں میں پہنچا رہی ہے۔