حوثی ملیشیا نے ہتھیار ڈالنے کی تیاری کرنے والے 31 جنگجو موت کے گھاٹ اتار دیئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یمن فوج کے ایک مصدقہ ذریعے نے خبر دی ہے کہ حوثی ملیشیا نے ہتھیار ڈالنے کی تیاری کرنے والے 31 جنگجوئوں کو موت کےگھاٹ اتار دیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ‌نیٹ‌ کے مطابق سرکاری فوج کے ماتحت 'عمالقہ فورسز' کی طرف سے بتایا گیا ہے کہ جنوبی علاقے الحدیدہ کے الدریھمی شہر میں درجنوں حوثی باغیوں نے گھیرے میں آنے کے بعد ہتھیار ڈالنے کی کوشش کی جس پر حوثی ملیشیا نے اپنے ہی ساتھیوں کو گولیاں مار کر قتل کردیا۔

العمالقہ فورسز کے ترجمان وضاح الدبیش نے بتایا کہ حوثی ملیشیا نے آبار کے مقام پر اپنےجنگجوئوں کو بد دیانتی کے الزام میں گولیاں مار کرقتل کیا اور اس کے بعد انہیں ایک اسکول کے صحن میں دفن کردیا گیا۔

الدبیش کا کہنا تھا کہ العمالقہ فورسز اور باغیوں کےدرمیان 18 مارچ سے مذاکرات جاری تھے۔ یہ بات چیت تربطۃ کے علاقے کے ایک مقامی شہری کی معاونت سے جاری رہےہیں۔ محاصرے میں آنے والے باغیوں نے ہتھیار ڈالنے اور خود کو حکام کے حوالے کرنے کی تیاری مکمل کرلی تھی مگر ملیشیا نے انہیں گولیاں مار کر قتل کردیا۔

العمالقہ فورسز کی طرف سے ملیشیا کے ہتھیار ڈالنے والے تمام جنگجوئوں کو جان کے تحفظ کی یقین دہائی کرائی گئی تھی اور ان کے ساتھ بین الاقوامی قوانین کے تحت حسن سلوک کی ضمانت فراہم کی گئی مگر انہیں ہتھیار ڈالنے سے قبل ہی قتل کردیا گیا۔
الدبیش نے بتایا کہ سرکاری فورسز اور باغیوں کے درمیان مذاکرات کئی روز جاری رہے۔ اس دوران ہتھیار ڈالنے والے باغیوں کو محفوظ راستے سے نکالنے کے انتظامات بھی مکمل کرلیے گئے تھے۔باغیوںً کے ہتھیار ڈالنے کی اطلاع ملتے ہی انہیں ایک جگہ جمع کرکے گولیاں مار کرقتل کردیا گیا۔

دوسری جانب حوثی ملیشیا نے سویڈن کی میزبانی میں الحدیدہ میں جنگ بندی کے حوالے سے طےپائےمعاہدے کی خلاف ورزیوں‌کا سلسلہ جاری ہے۔

سرکاری فوج کے ترجمان کے مطابق حوثی ملیشیا نے الدریھمی کے مشرقی علاقے میں بھاری توپ خانے سے حملہ کیا ہے۔ باغیوں‌نے سرکاری فوج کےٹھکانوں اور شہری آبادی پر بھاری توپ خانے کا استعمال کیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں