معمر قذافی کا مشہور خیمہ فروخت کے لیے پیش

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

لیبیا میں ایک شہری نے سابق سربراہ معمر قذافی کا مشہور خیمہ انٹرنیٹ پر فروخت کے لیے پیش کیا ہے۔ قذافی اپنی حکمرانی کے دور میں اس خیمے میں سربراہان کا استقبال کیا کرتے تھے اور اپنے بیرونی اسفار میں بھی اس کو ساتھ لے کر جایا کرتے تھے۔

خیمے کے مالک مسعود المشائی نے العربیہ ڈاٹ نیٹ سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ انہوں نے قذافی کی حکومت کے خاتمے کے بعد ان کی ملکیت میں موجود ایک خیمہ حاصل کر لیا جو قذافی کے ایک عزیز کے ذریعے ملا۔ اس دن کے بعد سے المشائی نے لیبیا کے مغربی شہر غریان کے جنوب میں واقع اپنے گھر میں اس خیمے کو محفوظ رکھا ،،، اور اب وہ انہوں نے خیمے کو فروخت کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے۔ المشائی کے مطابق یہ خیمہ مکمل ہے اور اس میں کوئی چیز کم نہیں۔

المشائی نے بتایا کہ انٹرنیٹ پر فروخت کے لیے پیش کرنے کے بعد سے انہیں لیبیا کے اندرون اور بیرون بالخصوص مصر اور برطانیہ سے کئی پیش کشیں موصول ہو چکی ہیں۔ ابھی تک لگائی جانے والی سب سے زیادہ قیمت 37 ہزار لیبیائی دینار (تقریبا 27 ہزار ڈالر) ہے تاہم المشائی نے اس قیمت پر خیمے سے دست بردار ہونے کا نہیں سوچا۔

المشائی نے مزید بتایا کہ یہ ایک نادر نوعیت کا خیمہ ہے جو معمر قذافی کے سوا کسی کے پاس نہیں تھا۔ اس کا ڈیزائن نہایت منفرد ہے اور یہ پانی کے خلاف مزاحمت کی اعلی ترین صلاحیت رکھتا ہے۔ مضبوط ستونوں پر قائم رہنے والا یہ خیمہ اندر سے شان دار نقوش کے ساتھ مزین ہے۔

معمر قذافی کی خواہش ہوتی تھی کہ وہ لیبیا میں اپنے بڑے مہمانان کا استقبال اسی خیمے میں کریں۔ علاوہ ازیں وہ سرکاری دوروں کے دوران بیرونی ممالک (مثلا اطالیہ، فرانس اور روس وغیرہ) میں بھی اپنا یہ خیمہ نصب کراتے تھے۔ تاہم 2009 میں اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے اجلاس میں شرکت کے موقع پر امریکی حکام نے نیویارک میں سینٹرل پارک میں اس خیمے کی تنصیب کی اجازت دینے سے انکار کر دیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں