.

اھواز میں مظاہرین پر پاسداران انقلاب نے گولیاں‌ چلا دیں، متعدد جاں بحق اور زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایرانی پاسداران انقلاب نے عرب اکثریتی صوبے الاھواز میں سیلاب کے باعث راستہ بند کرنے کے خلاف احتجاج کرنے والے شہریوں پر گولیاں چلائیں جس کے نتیجے میں ایک شہری جاں بحق اور کم سے کم 4 زخمی ہوگئے۔ مظاہرین سیلاب کی آڑمیں‌راستہ بند کرنے اور ایندھن اور پٹرولیم مصنوعات تک رسائی روکنے کے خلاف احتجاج کررہے تھے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق انسانی حقوق کی تنظیموں کا کہنا ہے کہ پاسداران انقلاب اور ایرانی پولیس نے الجلیزی ضلعے کے علاقے سھل میسان میں مظاہرہ کرنے والوں پر گولیاں چلائیں جس کے نتیجے میں ایک شہری ہلاک اور پانچ زخمی ہوگئے۔ ہلاک ہونے والے نوجوان کی شناخت عبود خلف الربیعی کے نام سے کی گئی ہے۔

سماجی کارکنوں کا کہنا ہے کہ پاسداران انقلاب نے مظاہرہ روکنے کے لیے سھل میسان اور اس کے اطراف میں چھاپے مارے اور دسیوں شہریوں کو حراست میں لے لیا۔

پولیس کی طرف سے مظاہرین کےخلاف طاقت کا وحشیانہ استعمال کیا گیا جس کے نتیجے میں متعدد شہری زخمی ہوئے۔ ادھر الاھواز کے شعبہ حادثات کے مطابق تباہ کن سیلاب کے باعث 74 دیہات کو خالی کرالیا گیا ہے۔ایرانی حکام کا کہنا ہے کہ سیلاب کے باعث تقریبا ایک لاکھ شہری نقل مکانی پرمجبور ہوئے ہیں جب کہ السوس، الخفاجیہ، البسیتین اور دور خوین شہروں میں بھی سیلاب کے خطرے کے پیش نظر شہریوں کی نقل مکانی کا خدشہ ہے۔