.

یمن : ضالع کے شمال میں گھمسان کی لڑائی ، سرکاری فوج کی حوثیوں کے ٹھکانوں پر گولہ باری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے صوبے ضالع کے شمالی علاقے مریس کے مغرب میں بدھ کے روز یمنی فوج اور حوثی ملیشیا کے درمیان شدید جھڑپیں ہوئی ہیں۔ اس دوران فوج نے جبل ناصہ میں باغیوں کے ٹھکانوں اور جتھوں کو گولہ باری کا نشانہ بنایا۔

حوثی ملیشیا نے یمنی فوج کی پیش قدمی کے خوف سے دمت شہر کی جانب آنے والے راستوں کو بلڈوزر اور بڑی گاڑیوں سے بند کر دیا۔

اس سے قبل اتحادی طیاروں نے منگل کی شب اور بدھ کو علی الصبح ضالع کے شمال میں جبل ناصہ اور صوبے کے شمال مغرب میں العود کے محاذ پر شدید حملے کیے۔

العربیہ کو دمت شہر میں طبی ذرائع کے حوالے سے معلوم ہوا ہے کہ شہر کے ہسپتالوں میں بدھ کے روز درجنوں حوثیوں کو مقتول اور زخمی حالت میں لایا گیا۔ ان میں بہت سے افراد کو صنعاء منتقل کر دیا گیا۔

ضالع صوبے کے ضلع قعطبہ کے علاقے مریس میں یمنی فوج کے ساتھ جھڑپوں کے دوران حوثی ملیشیا کے تین کمانڈر مارے گئے۔

اسی طرح صوبے کے شمال میں یمنی فوج کی توپ خانوں سے شدید گولہ باری کے نتیجے میں درجنوں حوثی باغی ہلاک اور زخمی ہو گئے۔

ادھر العود کے علاقے میں حمک کے محاذ پر یمنی فوج اور حوثی ملیشیا کے درمیان گھمسان کی لڑائی ہوئی۔ اس دوران 8 باغی مارے گئے جب کہ درجنوں زخمی ہوئے۔