.

لبنانی یہودی ارب پتی کا دفاتر اور رہائشی فلیٹس سے خالی فلک بوس عمارت کا منصوبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لبنانی نژاد ایک یہودی ارب پتی جوزف یعقوب صفرا نے لندن میں ایک ایسی فلک بوس عمارت تعمیر کرنے کا اعلان کیا ہے جو معاصر فلک بوس عمارتوں سے اس اعتبار سے منفرد ہوگی کی اس میں کوئی رہائشی فلیٹ یا دفتر نہیں ہوگا بلکہ یہ اونچی بلڈنگ صرف تعلیمی اور ثقافتی سرگرمیوں کے لیے مختص ہوگی۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ نے اس منصوبے کی تفصیلات معلوم کی ہیں۔ 81 سالہ لبنانی نژاد یہودی ارب پتی جوزف صفرا سنہ 1952ء کو لبنان میں پیدا ہوئے۔ بعد میں ان کا خاندان برازیل نقل مکانی کر گیا۔ گزشتہ منگل کو صفرا نے لندن میں برطانوی ماہرتعمیرات سیرنورمن فوسٹر کی ڈیزائن کردہ عمارت تعمیر کرنے کی اجازت حاصل کی۔ صفرا نے سنہ 2014ء کو Gherkin نام سے 9 کروڑ 48 لاکھ ڈالر سے ایک اونچی عمارت خرید کی۔ چالیس منزلہ یہ عمارت 180 میٹر بلند ہے۔

جوزف یعقوب صفرا نے لندن میں305 میٹر بلند ایک نئی عمارت کھڑی کرنے کی اجازت حاصل کی ہے۔ یہ عمارت برطانیہ میں پہلے سے موجود Shard کی طرز پر بنائی جائے گی تاہم اس کی اندرونی کیفیت مختلف ہوگی۔ اس میں کسی کمپنی کا کوئی دفترہوگا اور نہ ہی کوئی رہائشی فلیٹ ہوگا، بلکہ یہ طویل القامت عمارت صرف تعلیمی، سیاحتی اور ثقافتی سرگرمیوں کے لیے مختص ہوگی۔ اس کی تعمیرکا آغازآئندہ سال ہوگا اور پانچ سال میں یہ عمارت پایہ تکمیل کو پہنچ جائے گی۔ توقع ہے کہ سالانہ 12 لاکھ لوگ اس کو وزٹ کریں گے۔

جوز ف صفرا کی فلک بوس عمارت میں انواع واقسام کے کھانے، دن رات کام کرنے والے تفریحی مراکزتعلیمی ہال جس میں 20 ہزارافراد کے بیٹھنے کی گنجائش ہوگی اس عمارت کا حصہ ہوں‌ گے۔

جوز ف صفرا کو بیروت کی امریکی یونیورسٹی کا سب سے بڑا مالی معاونت کار سمجھا جاتا ہےان کا شمار برازیل کے امیر ترین عرب نژاد لوگوں میں ہوتا ہے۔ وہ عالمی ارب پتیوں کے ساتھ ساتھ برازیل کے پانچویں امیر ترین شخص ہیں۔ فوربز جریدے کے مطابق عالمی دولت مندوں میں ان کا نمبر 31 واں ہے اور ان کی دولت 24 ارب 60 کروڑ ڈالر تک بتائی جاتی ہے۔