.

حوثی باغیوں نے 50 ہزار بچوں کو جنگ کا ایندھن بنایا:یمنی حکومت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کی آئینی حکومت کے وزیر اطلاعات معمر الاریانی نے کہا ہے کہ حوثی ملیشیا نے ملک میں شہریوں کی غربت اور بے روزگاری سے ناجائز فایدہ اٹھاتے ہوئے ان کے 50 ہزار بچوں کو جنگ کا ایندھن بنایا۔ ان کا کہنا ہے کہ بچوں کو جنگ میں جھونکنے کا سلسلہ 2014ء سے جاری ہے اور یمن کے مستقبل میں یہ ایک حقیقی انسانی المیہ بن سکتا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق معمر الاریانی نے ایک بیان میں‌کہا کہ حوثی باغیوں کی جانب سے بچوں کو جنگ کا ایندھن بنانے کا سلسلہ انتہائی خطرناک اور بین الاقوامی قوانین کی سنگین خلاف ورزی ہے۔

یمنی وزیراطلاعات نے ان خیالات کا اظہار جرمن خارجہ تعلقات کونسل کے وائس چیئرمین فولکر سٹانزر سے ملاقات کے دوران کیا۔

یمنی عہدیدار نے خبردار کیاکہ ایران یمن کی باب المندب پر قبضہ کرنے کی کوشش کررہا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ ایران کو باب المندب پر قبضہ کرنے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔ یہ ایک اہم عالی آبی گزرگاہ ہے جہاں سے 12فی صد عالمی بحری تجارتی ٹریفک کی آمد ورفت ہوتی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ ایران کی طرف سے جنگ زدہ یمنی عوام کو امدادی سامان کا ایک ٹرک بھی نہیں دیا گیا۔